لمبی زبان اور چھوٹے دماغ والے چپ ہی رہو تو بہتر ہو گا :

اسلام آباد(ویب ڈیسک)وفاقی وزیر توانائی حماد اظہر نےمعروف خاتون صحافی اور ٹی وی اینکر عاصمہ شیرازی کو مسلم لیگ ن میں شامل ہونے کا مشورہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ یہ کوئی طنز نہیں، اگر پسند یہ ناپسند یا وابستگی ایک حد سے گزر جائے تو اس کا سیاسی اعلان کر دینا چاہیے۔

تفصیلات کے مطابق معروف خاتون صحافی عاصمہ شیرازی نے ’بی بی سی اردو‘ پر ’کہانی بڑے گھر کی ‘ کے نام سے کالم لکھا اور اپنے کالم میں سے منتخب کردہ پیرا مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ پر شیئر کیا جس میں انہوں نے لکھا تھا کہ ’اب کالے بکرے سرِ دار چڑھیں یا کبوتروں کا ٹونہ کیا جائے ، پُتلیاں لٹکائی جائیں یا سوئیاں چبھوئی جائیں، معیشت یوں سنبھلنے والی نہیں جبکہ معیشت کے تقاضے تبدیلی کا مطالبہ کر رہے ہیں‘۔عاصمہ شیرازی کے اس لنک پر تبصرہ کرتے ہوئے وفاقی وزیر حماد اظہر نے خاتون صحافی کا نام بھی غلط لکھتے ہوئے کہا کہ’’ اسماء بہن، آپ کو باقاعدہ ن لیگ میں شامل ہو جانا چائیے، میں یہ ہر گز طنز نہیں کر رہا، اگر پسند یہ ناپسند یا وابستگی ایک حد سے گزر جائے تو اس کا سیاسی اعلان کر دینا چاہیے۔حماد اظہر کا برطانوی خبر رساں ادارے پر بھی تنقید کرتے ہوئے کہنا تھا کہ یہ دیکھ کر دکھ ہوا کہ بی بی سی اردو جیسے ادارے کے پلیٹ فارم سے اس طرح کے قابل رحم نظریات اور افسوس ناک باتیں شائع کرنے کی اجازت ہے ۔دوسری جانب اینکر پرسن عاصمہ شیرازی اور وزیر اعظم عمران خان کے معاون خصوصی برائے سیاسی امور ڈاکٹر شہباز گل میں ٹوئٹر پر لفظی لڑائی چھڑ گئی۔ دوسری جانب عاصمہ شیرازی کے اس کالم پر ڈاکٹر شہباز گل کو غصہ آگیا اور انہوں نے عاصمہ پر ذاتی اٹیک کرتے ہوئے کہا ” آپ کے کالم کا عنوان ہونا چاہیے مریم کی کہانی عاصمہ کی

زبانی، آپ کے اس طرح کے ذاتی اٹیکس پر کوئی حیرت نہیں ہوئی کیوں کہ دو ہی تو مہارتیں ہی ن لیگ کی، سرکاری مال کھانا اور ذاتی کردار کشی کرنا۔”شہباز گل کے جواب پر عاصمہ شیرازی برہم ہوگئیں اور انہوں نے سخت الفاظ استعمال کرتے ہوئے شہباز گل کے بارے میں لکھا ” لمبی زبانوں اور چھوٹے دماغوں والے سرکاری مال پر پلنے والے صرف الزام ہی لگا سکتے ہیں کارکردگی کیا دکھائیں گے۔”خاتون اینکر کے اس حملے پر جوابی شاٹ کھیلتے ہوئے شہباز گل کا کہنا تھا ” دماغ تو اللہ کی دین ہے چھوٹا دے یا بڑا دے لیکن اس دماغ کو چند ٹکوں پر بیچ دینا ہمارے اپنے ہاتھ میں ہوتا ہے۔ مریم کے کہنے پر ایسے الفاظ لکھنا اور چھُپنا آزادی صحافت کے پیچھے، سرکاری مال پر کون پلتا ہے وہ یہ قوم دیکھ چکی، میں نے آج تک دو عمرے کئی دونوں اپنے پیسوں سے کیےاور آپ نے ؟”شہباز گل کے اس ٹویٹ کے بعد عاصمہ شیرازی نے مزید انہیں جواب نہیں دیا بلکہ صحافیوں کے ان ٹویٹس کو ری ٹویٹ کرنا شروع کردیا جن میں ان کے کالم کی تعریف کی گئی ہے۔

Comments are closed.