لندن میں مقیم پاکستانیوں کے ترجمان نے بتا دیا

لندن (ویب ڈیسک) پاکستان مسلم لیگ ن کے رہنما اور قومی اسمبلی کے رکن چوہدری احسان الحق باجوہ نے گزشتہ روز پارٹی کے قائد اور سابق وزیراعظم نواز شریف اور سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار سے ملاقات کی۔ احسان الحق باجوہ نے نواز شریف سے ان کی والدہ کے انتقال پر تعزیت

بھی کی۔ اس موقع پر انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کی حکومت نے عوام کا جینا دوبھر کردیا ہے اور زندگی کی بنیادی اشیاء بھی عوام کی پہنچ سے دور ہوچکی ہیں، موجودہ حکومت جب سے آئی ہے صرف گزشتہ حکومتوں پر تنقید کر رہی ہے اور ترقیاتی کاموں کی طرف کوئی توجہ نہیں دے رہی۔ انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ کے دور میں بڑے بڑے پراجیکٹ شروع کئے گئے، موٹروے سے لیکر اورنج ٹرین کے منصوبوں کی تکمیل کے سبب لوگ آج باآسانی سفر کرسکتے ہیں۔ مسلم لیگ کی حکومت نے بجلی کے بحران پر بھی قابو پالیا تھا لیکن موجودہ حکومت بجلی کی ترسیل بھی نہیں کر پارہی۔ احسان الحق باجوہ نے کہا کہ ملک میں ہونے والے حالیہ انتخابات سے حکومت کو اپنی حیثیت کا عوام کی نظروں میں اندازہ ہوجانا چاہئے۔ ڈسکہ کا الیکشن گواہ ہے کہ حکومت نے اسے جیتنے کیلئے کس طرح اخلاقی قدروں کوپامال کیا۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان ایک زمانے میں مودی کو ہٹلر قرار دیتے تھے اور اب مسئلہ کشمیر کے حل کے بغیر بھارت سے تجارت کرنے کیلئے بے چین نظر آتے ہیں اور چینی اور آٹا گروہوں پر قابو نہ پا سکنے کے سبب بھارت سے ان اشیاء کی درآمد پر غور کیا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر آج پاکستان میں الیکشن ہوں تو مسلم لیگ ن کی حکومت قائم ہوگی کیونکہ عوام نواز شریف کو وزیراعظم دیکھنا چاہتے ہیں، تبدیلی کا نعرہ لگا کر الیکشن چوری کرکے آنے والوں کو اندازہ ہوگیا ہے کہ ملک چلانا ان کے بس کی بات نہیں ہے۔ انہوں نے نواز شریف سے کہا کہ وہ اپنا علاج مکمل کراکر ہی پاکستان جائیں۔ دریں اثناء انہوں نے اسحاق ڈار سے بھی ملاقات کے دوران ملک کی اقتصادی صورت حال پر تبادلہ خیال کیا اور کہا کہ مسلم لیگ کی حکومت نے ملک کو ترقی کی راہ پر ڈال دیا تھا لیکن ناتجربہ کار حکومت نے ملک کو ایک مرتبہ پھر پٹری سے اتار دیا ہےجس کی سزا عوام بھگت رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت نے مسلم لیگ کی قیادت پر اوچھے الزامات لگائے تھے لیکن عوام کو ان کی حقیقت کا اندازہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ لاہور جیسے شہر میں گندگی کے ڈھیر حکومت کی کارکردگی کا منہ بولتا ثبوت ہیں۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *