مریم نواز کی سیاست پر صابر شاکر کا خصوصی تبصرہ

لاہور (ویب ڈیسک) نامور کالم نگار صابر شاکر اپنے ایک کالم میں لکھتے ہیں ۔۔۔۔۔۔ مسلم لیگ (ن )کے صدر شہباز شریف کا ایک انٹرویو محترم سہیل وڑائچ نے اپنے حالیہ کالم میں تحریر کیا ہے‘ جس میں انہوں نے انکشاف کیا ہے کہ عام انتخابات 2018ء سے ایک ماہ پہلے ان کی بااثر حلقوں سے ملاقات میں

ان کا کہ آئندہ وزیراعظم ہونا اور کابینہ تک کے نام فائنل ہوچکے تھے‘ لیکن پارٹی (مریم نواز) کے بیانیے نے ایسا نہ ہونے دیا۔میاں شہباز شریف کی اس گفتگو کا واحد مقصد اس کے علاوہ کچھ اور معلوم نہیں ہوتا کہ وہ سننے اور دیکھنے والوں کو یہ بتانا چاہتے ہیں کہ گزشتہ انتخابات میں انہیں مقتدر حلقوں نے آؤٹ کیا ہے‘ ورنہ تو معاملات کچھ اور تھے۔دوسرے لفظوں میں شہباز شریف وہی بات کر گئے جو مریم نواز کا بیانیہ ہے‘ یعنی سلیکٹرز اور سلیکٹڈ کا۔اور یہ بات شہباز شریف اس وقت کس کو سنا رہے ہیں اور کس کو آڑے ہاتھوں لے رہے ہیں ؟اور ان کی توپوں کا ہدف اصلاً کون ہیں؟ یہ بالکل واضح ہے۔یہاں ایک خبر اور شامل کردوں کہ پوری بات یہ ہے کہ شریف فیملی نے آخری وقت تک کوششیں جاری رکھیں کہ انہیں خدمت کا ایک اور موقع دیا جائے ‘خاص طور پر شہباز شریف نے بہت کوشش کی اور اس کیلئے انہوں نے سعودی عرب اور ایک اور تگڑے ملک سے براہ ِراست سفارشیں بھی کروائیں۔

Sharing is caring!

Comments are closed.