مریم نواز کی عمران اینڈ کمپنی کو وارننگ

لاہور (ویب ڈیسک) پاکستان مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر نے ہفتہ کو پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ضمنی انتخابات میں الیکشن کمیشن کے عملے کو غائب کرنے اور مبینہ دھاندلی پر الیکشن کمیشن کی اس پریس ریلیز کو سراہا ہے جس میں کمیشن نے اپنے عملے کے لاپتہ ہونے اور 20 پولنگ سٹیشن کے

نتائج میں ردوبدل کے امکانات کو تسلیم کیا ہے۔مریم نواز نے کہا کہ انھیں خوشگوار حیرت ہوئی ہے کہ الیکشن کمیشن نے قومی اسمبلی کے حلقہ 75 کے ضمنی انتخابات میں ہونے والی بدانتظامیوں اور مبینہ دھاندلی کے خلاف سٹینڈ لیا ہے۔خیال رہے کہ ڈسکہ سے قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 75 میں ہونے والے ضمنی انتخابات میں پاکستان مسلم لیگ نون کی جانب سے مبینہ دھاندلی کے الزامات اور ’23 لاپتہ پریزائیڈنگ افسران’ کے کئی گھنٹوں تک ‘غائب’ رہنے کے بعد الیکشن کمیشن آف پاکستان نے ہفتہ کو جاری کیے گئے اپنے اعلامیے میں کہا ہے کہ 20 پولنگ سٹیشنز کے نتائج پر شبہ ہے لہذا مکمل انکوائری کے بغیر غیر حتمی نیتجہ جاری کرنا ممکن نہیں ہے اور یہ معاملہ انتظامیہ اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کی کمزوری لگتی ہے۔ای سی پی کے مطابق این اے 75 کے نتائج اور پولنگ عملہ ‘لاپتہ’ ہونے کے معاملے پر چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجہ معاملے کی اطلاع ملتے ہی رات گئے مسلسل آئی جی پنجاب ،کمشنر گجرانوالہ اور ڈی سی گجرانوالہ سے رابطے کی کوشش کرتے رہے لیکن رابطہ نہ ہوا۔مریم نواز کے مطابق الیکشن کمیشن بھی چیخ پڑا کہ دھاندلی ہوئی ہے۔ کمیشن نے بتایا کہ ان کا اپنا عملہ بھی یرغمال بنا لیا گیا اور انتظامیہ بھی غائب تھی۔ انھوں نے کہا کہ اب ہمارا مطالبہ ہے کہ پورے حلقے میں ری الیکشن ہوں۔مریم نواز نے الیکشن کمیشن کے اصولی مؤقف کی تعریف کرتے ہوئے کمیشن سے مطالبہ کیا ہے کہ اب وہ ہونے والی مبینہ دھاندلی کے خلاف اپنی آئینی اور قانونی ذمہ داریاں پوری کرے اور ذمہ داران کے خلاف سخت سے سخت کارروائی عمل میں لائے۔ انھوں نے کہا کسی اور کے لیے نہیں تو اس کے لیے ہی کمیشن کو اس ان لوگوں کے خلاف کھڑے ہو جانا چائیے جو ان کی بے توقیری ہوئی ہے۔مریم نواز نے کہا کہ وہ اتوار کو خود ڈسکہ جائیں گی۔ ان کے مطابق ’میں ان کو اس وقت تک سکون کا سانس نہیں لینے دونگی جس وقت تک انصاف نہیں ہوتا۔ میں 2018 کی طرح انھیں پتلی گلی سے نہیں نکلنے دونگی، اب یہ میرا ایک دوسرا روپ دیکھیں گے۔‘مریم نواز نے کہا ہے کہ ضمنی انتخابات کے نتائج سے نیب کا بیانیہ ریجیکٹ،، ’ووٹ چور‘ عمران کا بیانیہ ریجیکٹ، باقی سب کا بیانیہ بھی ریجیکٹ اور صرف ایک بیانیہ کامیاب ہوا ہے، پاکستان کے کونے کونے میں گیا ہے اور وہ بیانیہ ہے نواز شریف کا بیانیہ ووٹ کو عزت دو ہے۔انھوں نے کہا کہ اب خلائی مخلوق کو اپنے ادارے کی عزت کے لیے سبق سیکھ لینا چائیے۔

Comments are closed.