موروثی سیاست کے خاتمے کے خواب چکنا چور کر دینے والی خبر آگئی

اسلام آباد(ویب ڈیسک)پاکستان تحریک انصاف کے رکن قومی اسمبلی مخدوم زین قریشی ینگ پارلیمنٹرینز فورم کے بلامقابلہ صدر منتخب ہو گئے جبکہ مسلم لیگ(ن)کی رومینہ خورشید عالم بلامقابلہ نائب صدر،پیپلزپارٹی کے سید مرتضیٰ محمود بلامقابلہ جوائنٹ سیکرٹری اور مسلم لیگ (ن)کی سیدہ نوشین افتخار بلا مقابلہ خزانچی وائی پی ایف بورڈ منتخب ہو ئیں۔

ینگ پارلیمنٹرینز فورم کی جنرل سیکرٹری کی نشست کیلئے پی ٹی آئی کی کنول شوزب نے اپنی جماعت کی عظمیٰ ریاض جبکہ میڈیا کوارڈینیٹر کی نشست کیلئے پی ٹی آئی کی تاشفین صفدر نے مدمقابل اپنی ہی جماعت کی شاندانہ گلزار خان کو شکست دیدی۔جمعرات کوینگ پارلیمنٹرینز فورم کا الیکشن پارلیمنٹ ہاؤس میں ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی قاسم خان سوری کے آفس میں منعقد ہوا۔ انتخابی عمل صبح 11 بجے سے شام 5 بجے تک ڈپٹی سپیکر قومی اسمبلی قاسم خان سوری جو کی نگرانی میں جاری رہا۔ رکن قومی اسمبلی مخدوم زین حسین قریشی، رومینہ خورشید عالم، سید مرتضیٰ محمود، سیدہ نوشین افتخار بالترتیب بلا مقابلہ صدر، نائب صدر، جوائنٹ سیکرٹری اور خزانچی وائی پی ایف بورڈ منتخب ہوئے۔جمعرات کو جنرل سیکرٹری اور میڈیا کوآرڈینیٹر کے عہدوں کے لیے انتخابات ہوئے۔ ایم این اے کنول شوزب اور عظمیٰ ریاض جنرل سیکریٹری وائی پی ایف بورڈ کے عہدے کے لیے جبکہ ایم این اے شاندانہ گلزار خان اور ایم این اے تاشفین صفدر میڈیا کوآرڈینیٹر وائی پی ایف بورڈ کے عہدے کے لیے مدمقابل تھیں۔ریٹرننگ آفیسر ڈپٹی سپیکر قومی اسمبلی قاسم خان سوری نے انتخابی نتائج کا اعلان کیا جس کے مطابق ایم این اے کنول شوزب نے 62 ووٹ لے کر جنرل سیکرٹری وائی پی ایف بورڈ منتخب ہوئیں اور ان کی مدمقابل عظمیٰ ریاض نے30 ووٹ حاصل کیے۔ ایم این اے تاشفین صفدر 54 ووٹ لے کر میڈیا کوآرڈینیٹرینگ پارلیمنٹرینز فورم بورڈ منتخب ہوئیں اور ان کی مدمقابل شاندانہ گلزار خان نے 38 ووٹ حاصل کیے۔ اسپیکر اسد قیصر اور ڈپٹی سپیکر قاسم خان سوری نے

وائی پی ایف بورڈ کے نومنتخب عہدیداران کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ ینگ پارلیمنٹرینز فورم بوڑد کے نو منتخب عہدیداران کا انتخاب ان پر ینگ پارلیمنٹرینز فورم کے ممبران کے اعتماد کا مظہر ہے۔ انہوں نے اس امید کا بھی اظہار کیا کہ نو منتخب عہدیداران ینگ پارلیمنٹرینز فورم کو مزید متحرک اور فعال بنائیں گے۔ اسپیکر اور ڈپٹی اسپیکر نے ینگ پارلیمنٹرینز فورم بورڈ کے نو منتخب عہدیداران کو ان کی ذمہ داریوں کی انجام دہی کے لیے اپنے اور قومی اسمبلی سیکرٹیریٹ کے مکمل تعاون کا یقین دلایا۔ اس موقع پر ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی نیینگ پارلیمنٹرینز فورم بورڈ کے اغراص و مقاصد سے آگاہ کرتے ہوئے بتایا کہ ینگ پارلیمنٹرینز فورم 2003 میں قائم کیا گیا اور 2013 میں اس کی تشکیل نو کی گئی۔ انہوں نے کہا کہ ینگ پارلیمنٹرینز فورم بنانے کا مقصد ینگ پارلیمنٹیرین کو ان کی ذمہ داریوں کے حوالے سے ان کی استعداد کار میں اضافہ کرنے تاکہ وہ اپنی ذمہ داریاں احسن طریقے سے انجام دے سکیں۔ انہوں نے کہا کہ ینگ پارلیمنٹرینز فور م کے الیکشن ہر دو سال بعد منعقد کیے جاتے ہیں اور موجودہ اسمبلی کے دور میں یہ دوسرے الیکشن ہے جو منعقد کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ انتخابات میں تمام جماعتوں سے تعلق رکھنے والے ممبران اور سینیٹرز نے حصہ لیا اور اجلاس نہ ہونے کے باوجود 92 ممبران نے ووٹنگ میں حصہ لیا۔

Comments are closed.