موصوفہ نے اپنے ہی شوہر کے مشورے سے کیا منصوبہ بنایا تھا ؟

سیالکوٹ ( ویب ڈیسک ) سیالکوٹ میں پٹرول پمپ کے قریب باہر کھڑی خاتون سے غلط کاری کے معاملے کا ڈراپ سین ہو گیا ، دونوں میاں بیوی نے چند افراد کو جھوٹے مقدمے میں پھنسانے کیلئے ڈرامہ رچایا تھا ۔ڈی پی او سیالکوٹ کے مطابق 14ستمبر کو سیالکوٹ کے رہائشی نے پولیس کو رپورٹ درج کرائی تھی کہ

وہ اپنی اہلیہ کے ساتھ عزیز کی طرف سے واپس لوٹ رہا تھا کہ راستے میں پٹرول ڈلوانے کیلئے بیوی کو پمپ کے باہر کھڑا کر کے خود پٹرول ڈلوانے چلا گیا ، اتنی دیر میں پانچ ملزمان گاڑی پر آئے اور خاتون کو اٹھا کر گاڑی میں ڈال کے لے گئے ۔سیالکوٹ کے علاقے اکبر چوک سے خاتون نیم بیہوشی کی حالت میں ملی جسے ریسکیو اہلکاروں نے ہسپتال پہنچایا ، عورت نے بیان دیا کہ اسے پٹرول پمپ کے باہر سے پانچ ملزموں نے جبری طور پر گاڑی میں بٹھایا اور اسکے ساتھ سب نے غلط کاری کی ۔پولیس نے مقدمہ درج کرتے ہوئے تفتیش شروع کی تو معاملات مشکوک نکلے ، ڈی پی او سیالکوٹ کے مطابق خاتون کے شوہر نے من گھڑت کہانی بنا کر مقدمہ درج کرایا، خاتون کے شوہر نے لوگوں کو پریشرائز کرنے کیلئے منصوبہ بندی کی تھی ، خاتون کو کسی نے نہ نہیں اٹھایا یا نہ ہی غلط کام کی تصدیق ہوئی ، تفتیش کے بعد خاتون نے عدالت میں بھی اعتراف کر لیا ۔ڈی پی او سیالکوٹ کے مطابق خاتون نے عدالت میں بیان دیا کہ اس کے ساتھ غلط کام نہیں ہوا میاں بیوی کے خلاف قانون کے مطابق دفعہ 182 کے تحت کارروائی کی جائے گی ۔یاد رہے کہ پچھلے کچھ سال سے پاکستان میں ایسے شرمناک الزامات اور مخالفین کو پھنسانے کے لیے مقدمات کی شرح میں اضافہ ہوا ہے ، خاص طور پر پاکستان کے پسماندہ علاقوں میں کچھ لوگ اپنے مخالفین کو پھنسانے کے جھوٹے اور شرمناک الزامات سے بھی گریز نہیں کرتے ۔

Comments are closed.