مولانا طارق جمیل بھی میدان میں آگئے

اسلام آباد(ویب ڈیسک) سعودی عرب میں تبلیغی جماعت پر پابندی عائد کیے جانے کی افواہیں گردش میں ہیں اور ان افواہوں کے ہنگام معروف عالم دین مولانا طارق جمیل نے علماءکے ایک وفد کے ہمراہ سعودی سفیر نواف بن سعید المالکی کے ساتھ ملاقات کی ہے ٹوئٹر پر مولانا طارق جمیل کے اکاﺅنٹ سے بتایا گیا ہے کہ

علماءکے وفد کی اس ملاقات میں سعودی سفیر کو دعوت و تبلیغ کی محنت، دینی خدمات اور اس کے عالمی اثرات کے بارے میں آگاہ کیا گیا۔ مولانا طارق جمیل کے علاوہ اس وفد میں مفتی عبدالرحیم اور مولانا طاہر اشرفی بھی شامل تھے۔ واضح رہے کہ سعودی عرب کی وزارت اسلامی امور نے چند ہفتے قبل ٹوئٹر پر کسی بھی تنظیم کا نام لیے بغیر اس پر پابندی کا اشارہ دیا تھا۔ سعودی وزارت کی طرف سے اپنی ٹویٹ میں ’تبلیغی و دعوہ گروپ‘ کو بدامنی کے دروازوں میں سے ایک دروازہ‘ قرار دیا گیا تھا۔اسلامی امور کے وزیر ڈاکٹر عبداللطیف شیخ نے اپنے اکاﺅنٹ سے کی گئی ایک الگ ٹویٹ میں کہا تھا کہ مساجد کے امام اور خطیب جمعہ کے خطبوں میں لوگوں کو ’تبلیغی و دعوہ گروپ‘ اور اس کی سرگرمیوں کے حوالے سے متنبہ کریں۔“سعودی وزیرڈاکٹر عبداللطیف شیخ کی طرف سے مزید کہا گیاتھا کہ ”امام اور خطیب اپنے خطبات میں لوگوں کو اس گروہ کے اسلام سے انحراف، گمراہ کن خیالات اور ان کی سنگین غلطیوں سے آگاہ کریں اور لوگوں کو بتائیں کہ اس گروپ سے کسی بھی طرح کی وابستگی رکھنا ممنوع ہے۔“