مولانا فضل الرحمٰن کا حیران کن بیان سامنے آگیا

لاہور (ویب ڈیسک) پی ڈی ایم کے صدر اور جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے گوجرانوالہ میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ‘ہم پاکستان کے اداروں کا احترام کرتے ہیں، فوج سے ہماری کوئی لڑائی نہیں لیکن اگر دفاع کی ذمہ داری کے علاوہ آپ سیاست میں

دخل اندازی کرتے ہیں، اپنی نگرانی میں انتخابات کرواتے ہیں، مارشل لا لگاتے ہیں، آئین کی پامالی کرتے ہیں تو آپ کے خلاف کلمہ حق بلند کرنا ہمارا نہیں تو کس کا کام ہے۔’انھوں نے ملکی اسٹیبلشمنٹ کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ‘سلیکٹیڈ کے سلیکٹرز کہتے ہیں کہ ہمارا نام نہیں لینا، کیوں نہ لیں آپ کا نام آپ نے جمہوریت کو بیچ چوراہے پرختم کیا ہے۔ کیا سلیکٹرز اپنے سلیکٹیڈ کی کارکردگی سے خوش ہیں؟’ان کا کہنا تھا کہ ‘سیاست میں اداروں کی مداخلت ختم ہونی چاہیے، وہ اپنی غلطی تسلیم کر لیں اور قوم سے معافی مانگیں تو ہی بات ہو گی۔ اپنے اختیارات سے تجاوز کرنے سے ملک نہیں چلا کرتے۔ اگر ملک چلانا ہے تو تمام اداروں کو اپنی حدود کا تعین کرنا ہے۔’مولانا فضل الرحمان نے جمعے کے روز قومی اسمبلی کے اجلاس میں وزیراعظم عمران خان کی شرکت کے دوران اپوزیشن کی جانب سے احتجاج اور نعرے بازی کرنے پر اجلاس سے واپس چلے جانے کے واقعہ کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ ‘آج سے پی ڈی ایم کی حکومت مخالف تحریک شروع ہو گئی ہے اور حکومت دسمبر نہیں دیکھ سکے گی، آج حکومت کے اوسان خطا ہو چکے ہیں، آج اپوزیشن کے پندرہ ممبران اسمبلی نے پارلیمان میں اکثریت کے دعوے دار کو بھگا دیا ہے۔اس سے قبل اپوزیشن کی دو بڑی جماعتوں مسلم لیگ نواز کی مریم نواز اور پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کئی گھنٹوں کے سفر کے بعد جلسہ گاہ پہنچے تھے۔بلاول بھٹو زرداری نے لالہ موسیٰ سے گوجرانوالہ کا سفر طے کیا جس سے کچھ ہی دیر قبل مریم نواز کا کاروان لاہور سے سات گھنٹے کے سفر کے بعد جناح سٹیڈیم پہنچا تھا۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *