مکمل لاک ڈاؤن کب لگنے والا ہے ؟ آج کی سب سے بڑی خبر

اسلام آباد (ویب ڈیسک)سربراہ این سی او سی وفاقی وزیر اسد عمر کا کہنا تھا کہ اگر لوگوں نے احتیاط نہ کی توعید سے قبل مکمل لاک ڈائون جیسی صورتحال بن سکتی ہے ،اس لیے عوام عید سے قبل ہی عید کی شاپنگ کرلیں ۔تفصیل کے مطابق وزیراعظم عمران خان کے زیر صدارت

ای سی سی کا اہم اجلاس ہوا جس میں کورونا وائرس کی صورتحال اور آئندہ کے لائحہ عمل کا جائزہ لیا گیا۔ اجلاس کے بعد میڈیا کو نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کے سربراہ اسد عمر اور معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصلہ سلطان نے بریفنگ دی۔اس موقع پر بریفنگ دیتے ہوئے اسد عمر کا کہنا تھا کہ ان ڈور ڈائننگ پر پابندی تھی اب آؤٹ ڈور پر بھی پابندی لگائی جا رہی ہے۔ شام 6 بجے کے بعد اشیائے ضروریہ کی دکانیں کھلیں گی تاہم بازار اور مارکیٹس کو بند کر دیا جائے گا،عید تک صرف اور صرف ٹیک ٹیک او ے اور گھر پر کھانا پہنچانے کی اجازت ہوگی ،اسد عمر نے کہا کہ خدشہ ہے کہ ایسی صورتحال پیدا نہ ہو جائے کہ شہروں میں لاک ڈاؤن کرنا پڑے،اسد عمر کا کہنا تھا کہ اگر عوا م نے ایس او پیز پر سختی سے عملدر آمد نہ کیا تو عید سے قبل مکمل لاک ڈائون کی طرف جا سکتے ہیں ۔بریفنگ دیتے ہوئےاسد عمر نے کہا 50 فیصد ورک فرام ہوم کی پالیسی پر زور دیا جا رہا ہے۔ تمام وہ اضلاع جہاں 5 فیصد سے زیادہ مثبت کیسز ہیں، وہاں سکول بند ہوں گے۔ جن شہروں میں کورونا کیسز زیادہ ہونگے وہاں 9ویں سے 12 ویں جماعت کی کلاسز عید تک بند کر دی جائیں گی۔وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ دفتری اوقات دوپہر 2 بجے تک ہوں گے۔ ان ڈور ڈائننگ پر پہلے سے پابندی ہے، ٹیک اوے کی اجازت ہوگی۔ عید تک آؤٹ ڈور ڈائننگ پر بھی پابندی لگائی جا رہی ہے۔ لاک ڈاؤن کے حوالے سے صوبوں سے مل کر پلان بنائیں گے۔دوسری طرف سینٹ سیکرٹریٹ کی طرف سے اعلان کر دیا گیا کہ سیکرٹریٹ کو کورونا کیسز میں اضافے کی وجہ سے بند کیا جا رہا ہے ،اعلامیہ کے مطابق سینیٹ سیکریٹریٹ کےدفاتر 26 اپریل سے 30 اپریل تک بند رہیں گے،سینیٹ سیکریٹریٹ میں معمول کی سرگرمیاں 3 مئی سے شروع ہوں گی۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *