مہنگائی نے سالوں پرانی ثقافت کی طرف لوٹا دیا :

ہنزہ (ویب ڈیسک) ہنزہ کے علاقے سوست میں پیٹرول مہنگا ہونےکے باعث دولہا سالوں پرانی ثقافت اپنانے پر مجبور ہوگیا۔نجی ٹی وی چینل کی ایک رپورٹ کے مطابق ہنزہ کے بالائی علاقےگوجال میں پاک چین سرحد کے قریب واقع گاؤں سوست میں پولیس اہلکارکی شادی تھی جس نے پیٹرول مہنگا ہونےکے باعث

دلہن کو رخصتی کے بعد اپنے گھر لانے کے لیے سالوں پرانی ثقافت اپنالی۔دولہا رخصتی کے بعد گھر آنے کے لیے نہ صرف خود ہمالین بیل پر سوار ہوا بلکہ دلہن کو بھی یاک پر بٹھا دیا۔اس موقع پر دولہا کا کہنا تھا کہ پیٹرول مہنگا ہوگیا ہے اور وہ کسی بڑی گاڑی کا خرچہ بھی برداشت نہیں کرسکتا ، اس لیے ہم نے اپنی پرانی ثقات کو دوبارہ سے اپنایا ہے۔دولہا کاکہنا تھا کہ یاک پر سواری کی ایک وجہ پیٹرول کا مہنگا ہونا ہے اور دوسرا اپنی ثقافت کو دوبارہ زندہ کرنا ہے، بارات لانےکے لیے لوگوں نے نت نئے انداز اپنانا شروع کردیے ہیں، پر ہم نے اپنی سالوں پرانی ثقافت کے تحت یاک کا انتخاب کیا۔دولہا کا مزید کہنا تھا کہ شادی پر خوشی بھی ہو رہی ہے تاہم مہنگائی کی وجہ سے پریشانی بھی ہے۔