م باتیں کرتے ہو مجھے اگر یہ چیز مل جائے تومیں برج الخلیفہ‘کو غائب کر دوں ۔۔۔۔۔

دبئی کا ’برج خلیفہ‘ دنیا کی سب سے اونچی عمارت ہے جسے دیکھنے سیاح دور دور سے آتے ہیں اور اس عظیم الشان عمارت کی خوبصورتی کو دیکھ کر لطف اٹھاتے ہیں۔ اب اِسی ’برج خلیفہ‘ کو لے کر ایک جادوگر نے دلچسپ اعلان کر کے کچھ لوگوں کو حیران

تو کچھ کو پریشان کر دیا ہے۔ امارات کی ریاست راس الخیمہ سے تعلق رکھنے والے جادوگر ڈاکٹر منتصر المنصور نے یہ حیرت انگیز دعویٰ کیا ہے کہ اگر انہیں کوئی اسپانسر مل جائے تو کچھ سیکنڈز کے لئے وہ ’برج الخلیفہ‘ کو غائب کر دیں گے۔ المنصور نے پْریقین انداز میں اپنے دعوے کو دہراتے ہوئے کہا ہے کہ وہ برج خلیفہ کو غائب کر سکتے ہیں۔ اْن کے الفاظ میں: ’میں تین سکینڈز کے لئے برج خلیفہ کو آنکھوں سے اوجھل کرسکتا ہوں لیکن شرط یہ ہے کہ مجھے کوئی اسپانسر کردے۔ میں یہ جادو دسمبر میں کرنا چاہتا ہوں۔ اگر کوئی اسپانسر تیار ہوا تو پھر سب ہی میرا یہ جادو دیکھیں گے‘۔ ‘ ڈاکٹر منتصر وہ پہلے عرب شہری ہیں جنھوں نے جادو کی دنیا کا آسکر ایوارڈ سمجھا جانے والا ’مرلن ایوارڈ‘ دو مرتبہ جیتا۔ یہ ایوارڈ ہرسال امریکا میں قائم بین الاقوامی جادو گر سوسائٹی کی جانب سے دیا جاتا ہے۔ ڈاکٹر المنصور کا کہنا ہے کہ وہ 26سالوں کے دوران 70ہزار میجک شوز اسٹیج پر پیش کر چکے ہیں۔- تاریخ پر نظر ڈالی جائے تو ہیرو نائمس بوسک کا نام جادوئی کرتب کے حوالے سے آج بھی زندہ ہے۔ اس کے بعد بہت نامور میجک ماسٹر اس میدان میں آئے ، جین ہوجین ، روبرٹ ہودین پہلا جدید جادو گر تھا، جدید جادوئی کرتبوں کا آغاز اسی نے کیا اور 1840ء میں پیرس میں میجک تھیٹر بنا کر اس فن کو عروج بخشا جس میں اس نے مکینکل انجیئرز کی مدد سے کافی جدیدآلات کا استعمال بھی کیا۔ اس کے بعد برطانوی میجک ماسٹر جے این میکلیں نے اس فن کے فروغ میں اہم کردار اداکیا۔ 1873ء میں لندن میں اس کے لئے باقاعدہ ہال تعمیر کیا گیا۔ اس ہال میں تمام جادوئی آلات فراہم کئے گئے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.