نواز شریف کھل کر بول پڑے

لاہور (ویب ڈیسک) آج اسلام آباد میں ہونیوالی متحدہ اپوزیشن کی آل پارٹیز کانفرنس میں میاں نواز شریف نے ویڈیو لنک کے ذریعے خطاب کیا ۔میاں نواز شریف کا کہنا تھا کہ یہ اے پی سی عمران خان یا انکی حکومت کے خلاف نہیں بلکہ ہم سب تو ان کو قوم پر مسلط کرنے والوں کے خلاف اٹھ

کھڑے ہوئے ہیں ۔ نواز شریف کا کہنا تھا کہ حکمران اور قوم جان لیں ہمیں عمران خان سے کوئی مسئلہ نہیں ، ہمیں اصل مسئلہ تو دھاندلی اور سیلکشن کے ذریعے عمران خان کو لانے والوں پر ہے ۔ اقتدار ایک مقدس امانت ہے جو عوام ووٹ کے ذریعے کسی کو سونپتے ہیں ، جب عوام کی اس امانت میں خیانت ہوتی ہے اور الیکشن سے پہلے سب طے کر لیا جاتا ہے کہ کس کو جتانا اور کس کو ہرانا ہے اوردھاندلی کے ذریعے عوام کو دھوکہ دیا جاتا ہے عوامی مینڈیٹ چوری کیا جاتا ہے تو پھراس سے پاکستان کو تجربات کی لیبارٹری بنا دیا جاتا ہے ، میاں نواز شریف کا کہنا تھا کہ کسی کو دبانے اور کسی کو اوپر لانے کی اس کوشش سے پاکستان کی جگ ہنسائی ہوتی ہے ،انہوں نے کہا کہ جرنیلوں کو 9 ،9 سال اوسطاً ٹائم دیا گیا مگر جمہوری حکمرانوں کو اوسطاً 2 سال بھی گزارنے نہ دیے گئے اور رخصت کردیا گیا ، میاں نواز شریف کا کہنا تھا کہ مجھے یہ دیکھ کر دکھ ہوتا ہے کہ جس طرح پاکستانی عدالتوں نے ڈکٹیٹر کو کھلی چھٹی دے کر ملک و قوم کے ساتھ کھلواڑ کیا اور جموری رہنماؤں پر زمین تنگ کردی گئی ۔ آئین پر عمل کرنے والے قید میں یا کٹہروں میں کھڑے ہیں مگر قانون و آئین کے ساتھ کھلواڑ کرنے والے ڈکٹیٹر کے خلاف فیصلہ دینے والی عدالت کو ہی غیر قانونی قرار دے دیا گیا ۔ آخر کب تک ایسا چلے گا ۔اپنے خطاب کے آخر میں نواز شریف کا کہنا تھا کہ میں اے پی سی کی شرکاء جماعتوں اور رہنماؤں کو یقین دلاتا ہوں کہ وہ سب ملکر جو بھی لائحہ عمل تیار کریں گے میں خود اور پوری مسلم لیگ (ن) اس پر مکمل طور پر کاربند ہو نگے اور ہر قسم کا تعاون کریں گے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.