نواں کٹا کھل گیا ۔ چوہدری برادران چیئرمین نیب کے خلاف کھل کر میدان میں آگئے

لاہور (ویب ڈیسک) لاہور ہائی کورٹ میں مسلم لیگ ق کے رہنماؤں چوہدری برادران (چوہدری شجاعت حسین اور چوہدری پرویز الٰہی) کی قومی احتساب بیورو (نیب) کے چیئرمین کے اختیارات کے خلاف درخواستوں پر سماعت ہوئی۔دورانِ سماعت عدالتِ عالیہ نے نیب کو 6 جولائی کے لیے نوٹس جاری کرتے ہوئے اس سے

جواب طلب کر لیا۔لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس سردار احمد نعیم پر مشتمل بنچ نے کیس کی سماعت کی۔چوہدری برادران نے چیئرمین نیب کے اختیارات کو چیلنج کر رکھا ہے، ان کی جانب سے نیب کی 3 انکوائریز کو چیلنج کیا گیا ہے۔چوہدری برادران نے اپنی درخواست میں مؤقف اختیار کیا ہے کہ نیب سیاسی انجینئرنگ کرنے والا ادارہ ہے، نیب کے کردار اور تحقیقات کے غلط انداز پر عدالتیں فیصلے بھی دے چکی ہیں۔درخواست گزاروں کا مؤقف ہے کہ چیئرمین نیب نے 20 سال پرانے معاملے کی دوبارہ تحقیقات کا حکم دیا ہے، چیئرمین نیب کو 20 سال پرانی اور بند کی جانے والی انکوائری دوبارہ کھولنے کا اختیار نہیں۔واضح رہے کہ اس سے قبل چوہدری برادران کی درخواستوں پر سماعت کرنے والا بنچ دو بار تحلیل ہو چکا ہے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.