نوجوت سنگھ سدھو اپنے دیس میں اپنے لوگوں سے کس بات پر معافی کے طلبگار ہو گئے ؟

لاہور (ویب ڈیسک) سابقہ بھارتی کرکٹر اور ریاست پنجاب سے انڈین نیشنل کانگریس کے رکن اسمبلی نوجوت سنگھ سدھو نے غیر ارادی طور پر سکھوں کے جذبات مجروح کرنے پر معافی مانگ لی۔ واضح رہے کہ سدھو کی معافی اس وقت سامنے آئی جب گولڈن ٹیمپل کے اکل تخت سربراہ ہرپریت سنگھ نے

سدھو سے معافی مانگنے کا مطالبہ کیا تھا۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق سدھو نے جو شال پہنی جو سکھ مذہبی نشانات سے مزین تھی۔اس حوالے سے سوشل میڈیا پر ہی سدھو نے ایک بیان جاری کیا جس میں انھوں نے معافی مانگتے ہوئے کہا کہ انھوں نے نادانستہ طور پر یہ شال پہن لی۔ سدھو نے اپنے ٹوئٹ میں لکھ کہ ’شری اکل تخت سربراہ عظیم ہیں، میں نے غیر ارادی طور پر بھی کسی کے جذبات کو ٹھیک پہنچائی ہے تو میں اس سے معافی مانتا ہوں۔ انھوں نے کہا کہ لاکھوں سکھ ان محترم نشانات کو اپنی پگڑی، کپڑوں پر پہنتے ہیں، تاہم میں نے بھی غیر ارادی طور پر یہ شال پہن لی۔واضح رہے کہ گولڈن ٹیمپل میں سدھو کے خلاف شکایات ملنے کے بعد اکل تخت کے سربراہ گیانی ہرپریت سنگھ نے سدھو سے عوامی سطح پر معافی مانگنے کا مطالبہ کیا تھا۔ دوسری جانب اکل تخت کے پرسنل اسسٹنٹ جسپال سنگھ کا کہنا ہے کہ سیکریٹریٹ کو ابھی تک سدھو کی جانب سے تحریری معافی نامہ نہیں ملا ہے۔

Comments are closed.