(ن) لیگی رکن اسمبلی کے انکشاف نے نئی بحث چھیڑ دی

پشاور(ویب ڈیسک)پاکستان مسلم لیگ ن کے منتخب رکن خیبرپختونخوا اسمبلی سرداراورنگزیب نلوٹھا نے اپنا استعفیٰ اسپیکر کو بھجوانے کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ اسپیکر کو موصول ہونے والا استعفیٰ بوگس اور اس پر دستخط جعلی ہے جس کا مقصد پی ڈی ایم تحریک کو کمزور بنانا ہے.

اسمبلی سیکرٹریٹ کی جانب سے انہیں تاحال کوئی نوٹس نہیں ملا ہے، نوٹس ملنے پر بھی وہ سپیکر کے روبرو پیش نہیں ہوں گے جبکہ اسمبلی سیکرٹریٹ کی جانب سے ارسال کردہ نوٹس میں لیگی رکن کو استعفیٰ کی تصدیق کیلئےسپیکر کے روبرو پیش ہونے کی ہدایت کی گئی ہے اور واضح کیا گیا ہے کہ7دنوں کے اندر پیش نہ ہونے کی صورت میں ان کا استعفیٰ منظور کرلیا جائیگاپاکستان ڈیمو کریٹک موومنٹ کی جانب سے حکومت مخالف احتجاجی تحریک کے دوران قومی اور صوبائی اسمبلیوں سے استعفیٰ کے فیصلہ کی روشنی میں مسلم لیگ ن کے منتخب ارکان نے بھی اپنے استعفے پارٹی قیادت کو ارسال کئے ہیں تاہم خیبر پختونخوا اسمبلی میں مسلم لیگ ن کے رکن سردار اورنگزیب نلوٹھا کا استعفیٰ پارٹی قیادت کی بجائے سپیکر صوبائی اسمبلی مشتاق احمد غنی کو موصول ہوگیا ہےخیبر پختونخوا اسمبلی سیکرٹریٹ ترجمان کے مطابق لیگی ایم پی اے سردار اورنگزیب نلوٹھا کا استعفیٰ سپیکر مشتاق احمد غنی کو بذریعہ ڈاک موصول ہوا تھا جس پر اسمبلی سیکرٹریٹ کی جانب سے اورنگزیب نلوٹھا کوسات روز میں ذاتی حیثیت میں سپیکر کے روبرو پیش ہوکر استعفیٰ کی تصدیق کرنے کا کہا گیا ہے بصورت دیگر انکا استعفی منظور کر لیاجائے گا۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *