ورلڈ بنک نے تخمینہ بتا دیا

کراچی(ویب ڈیسک)ورلڈ بینک کنٹری ڈائریکٹر پاکستان نے کہا ہے کہ کراچی کے انفراسٹرکچرکی بہتری کے لئے 9سے 10ارب ڈالر لگیں گے۔10سال کی مد کے قرضے سے کراچی کی ٹرانسپورٹ، سیوریج،پانی اور سولڈ ویسٹ کے مسائل حل ہوسکیں گے۔ورلڈ بینک نے سال 2018میں کراچی پر ایک تفصیلی رپورٹ جاری کی تھی جس کے مطابق کراچی کو

زندگی گزارنے کے قابل شہر بنانے کے لیے 10ارب ڈالرز کا خرچہ آئے گا۔کنٹری ڈائریکٹر کے مطابق کچرے اور آلودگی کی وجہ سے کراچی کا شمار جنوبی ایشیا کے پانچویں گندے ترین اور آلودہ شہر میں ہونے لگا ہے۔2018کی رپورٹ میں کراچی کے مسائل پر خطرے کی گھنٹی بجا دی تھی۔ کراچی کو ٹرانسپورٹ، ٹوٹی پھوٹی سڑکوں، پانی کی فراہمی اور نکاسی، کچرے، تجاوزات، بڑھتی آبادی اور آلودگی کے مسائل کا سامنا ہے۔کراچی کو زندگی گزارنے کے قابل شہر بنانے کے لیے 10ارب ڈالرز کا خرچہ آئے گا جس کی تکمیل میں 10سال کا عرصہ لگے گا۔

Sharing is caring!

Comments are closed.