وزیراعظم عمران خان کا مریم نواز کے بارے میں حیران کن بیان منظر عام پر

اسلام آ باد (ویب ڈیسک) وزیراعظم عمران خان نے مسلم لیگ (ن) کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے الزام لگایاہے کہ نواز شریف لندن میں بیٹھ کر فوج کو آرمی چیف اورآئی ایس آئی چیف کے خلاف بغاوت پر اکسا رہا ہے‘ اس سے بڑا ملک دشمن کون ہو سکتا ہے۔لندن جانے کیلئے نوازشریف نے ایسی شکل بنائی

کہ عورتیں بھی روپڑیں ‘نوازشریف گیدڑ بن کر باہر بیٹھا ہے اور این آراونہ ملنے پرفوج اور عدلیہ پر اٹیکس کررہاہے ‘ان کے بیٹے بھی پیسے چرا کر باہر بیٹھے ہیں‘بیٹی بھی فوج کے خلاف یہی زبان استعمال کررہی ہے ‘ خاتون ہونے کے ناطے احترام کرتے ہیں اس لئے کچھ نہیں کہہ رہے‘کوئی اور ملک ہوتاتو سیدھی قید میں جاتی۔ نوازشریف اور آصف زرداری نے ایک دوسرے کے خلاف مقدمات بنائے ‘اب سارے چور ملکر ڈرامہ کررہے ہیں ‘کہتے ہیں ہم قانون سے بالا ہیں ‘پیسہ واپس نہیں کرینگے‘زر داری اور نواز شریف کو این آر دینا ملک سے سب سے بڑی غداری ہوگی‘ قانون کی بالادستی کیلئے پورازورلگاؤں گا۔پاکستان کو ایسا ملک بنانا چاہتے ہیں جسے باہر سے قرضے نہ مانگنا پڑیں، معیشت تیزی سے ترقی کر رہی ہے، ایم ایل ون کی صورت میں پاکستان میں پہلی دفعہ چین بڑی سرمایہ کاری کررہا ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعہ کو مینگوری میں جلسہ عام اور حسن ابدال میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ صحت سہولت کارڈ فراہم کرنے کے منصوبہ کے افتتاح کے موقع پر مینگورہ میں عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ پاکستان کے سارے بڑے بڑے چور اکٹھے ہو گئے ہیں اور چاہتے ہیں انہیں نہ پکڑا جائے ۔ ایک چور لندن جا کر بیٹھ گیا ہے ، اس نے بیمار ہونے کی ایسی اداکاری کی کہ ہمیں ترس آ گیا، عدالتوں کو بھی اس پر ترس آ گیا اور انہوں نے کہا کہ اسے باہر جانے دو۔ میں نے عدالت سے کہاکہ ان سے 7 ارب روپے لے کررکھ لو کیونکہ یہ پیسے کی پوجا کرتا ہے۔

 باہر جانے کے بعد نواز شریف نے کوشش کی کہ کسی طرح این آر او مل جائے لیکن وہ جانتا ہے کہ عمران خان یہ نہیں دے گا اور جب اسے یقین ہو گیا کہ وہ جو مرضی پریشرائز کرلے اسے این آر او نہیں ملے گا تو اب اس نے پاکستان کی فوج اور عدلیہ پر اٹیک کرنے کی نئی گیم شروع کی ہے ۔ فوج کو بغاوت کے لئے کہہ رہا ہے ۔بیٹی بھی یہی بات کہہ رہی ہے۔ بیٹے پاکستان نہیں آ رہے ہیں کیونکہ انہیں پتہ ہے کہ وہ بھی قید میں جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ یہ ملک کے لئے فیصلہ کن وقت ہے۔ نواز شریف اور زرداری ایک دوسرے کو چور کہتے اور قید میں ڈالتے رہے ۔ ایک دوسرے کے خلاف مقدمے بنائے۔ آج اکٹھے ہو کر مجھ سے این آر او مانگ رہے ہیں اور پاکستانیوں کو یہ پیغام دے رہے ہیں کہ وہ قانون سے بالا تر ہیں ۔انہوں نے مجمع سے سوال کیا کہ کیا اربوں کی چوری کر کے پیسہ باہر لے جانے والے جو این آر او مانگ رہے ہیں کو این آر او دے دینا چاہیے جس پر مجمع سے نہیں کا جواب آیا۔ وزیراعظم نے کہا کہ جس دن میں نے کرسی بچانے کے لئے لٹیروں کو این آر او دے دیا تو میں سب سے بڑی غداری کروں گا۔مشرف نے شریفوں اور زرداری کو این آر او دے کر ملک کے ساتھ سب سے بڑاظلم کیا۔ان کی چوری کا بوجھ آج ہمیں اٹھانا پڑرہا ہے۔وزیر اعظم نے اس عزم کا اظہار کیا کہ پاکستان کو فلاحی ریاست بنانے اور قانون کی بالا دستی قائم کرنے کے لئے وہ اپنا پورا زور لگائیں گے۔دریں اثناءعمران خان نے کہا ہے کہ پاکستان کو ایسا ملک بنانا چاہتے ہیں جسے باہر سے قرضے نہ مانگنا پڑیں، معیشت تیزی سے ترقی کر رہی ہے، ایم ایل ون کی صورت میں پاکستان میں پہلی دفعہ چین بڑی سرمایہ کاری کررہا ہے، پاکستان سیاحت کے حوالے سے بڑا مرکز بنے گا۔ 

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *