وزیر اطلاعات فواد چوہدری کا متنازعہ بیان سامنے آگیا

اسلام آباد (ویب ڈیسک) وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات فواد چوہدری نے کہا ہے کہ اس وقت تمام معاشی اشاریے مثبت ہیں اور مجموعی صورت حال میں واضح طور پر استحکام نظر آرہا ہے۔خیبرپختونخوا کے بلدیاتی انتخابات کے حوالے سے سوال پر انہوں نے کہا کہ جب ایک حلقے میں ایک ہی پارٹی کے تین،تین اور چار،چار امیدوار الیکشن

لڑنا شروع کردیں گے تو الیکشن ہار جائیں گے اور یہاں پر بھی ایسا ہی ہوا ہے۔انہوں نے کہا کہ منیجمنٹ کے مسائل کی وجہ سے کے پی میں الیکشن ہارے ہیں لیکن ایک بار پھر ثابت ہوا ہے کہ صرف پی ٹی آئی ہی ملک گیر جماعت ہے، باقی مقامی جماعتیں ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ اگر جعیت علمائے اسلام (جے یو آئی) جیسے جماعت پی ٹی آئی کا متبادل ہے تو اس کا مطلب ہے کہ پاکستان کے عوام اور پی ٹی آئی کے لوگوں کو زیادہ سنجیدگی سے سوچنا ہے اگر پی ٹی آئی ملک میں نہیں ہوگی تو کوئی قومی جماعت نہیں ہوگی۔فواد چوہدری نے کہا کہ پھر متنازعہ مذہبی جماعتیں ہیں جیسے جمعیت علمائے اسلام ہے، انہوں نے 2002 میں خیبرپختونخوا میں تعلیم اور فنانس کو تباہ کردیا تھا۔کے پی میں جمعیت علمائے اسلام کی کامیابی پر بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ بڑی بدقسمتی ہے کہ ہماری غلطیوں کی وجہ سے ایک ایسی سیاسی جماعت وہاں پر سامنے آئی ہے جس کو اصولی طور پر ختم ہونا چاہیے تھا۔ان کا کہنا تھا کہ ہم ادھر دیکھتے ہیں تحریک لبیک پاکستان (ٹی ایل پی) کا ابھرنا یا جمعیت علمائے اسلام تو اس سے پاکستان نیچے چلا جائے گا۔ان کا کہنا تھا کہ مارچ میں اجلاس ہونے جارہا ہے تو اس لیے کشمیر کو مارچ کے لیے رکھا گیا ہے۔ایک سوال پر انہوں نے کہا کہ جےیو آئی کا خیبرپختونخوا کا نام نہاد اٹھنا بھی ذاتی طور پر مجھے مایوسی ہوئی ہے کیونکہ اس طرح کی جماعتیں وہ رجعت پسند معاشرے کی علامت ہیں اور اس چیز کی علامت ہیں کہ پاکستان میں سب کچھ صحیح نہیں ہے۔

Comments are closed.