وفاقی ملازمین کی تنخواہوں میں کتنا اضافہ کردیا گیا ؟

اسلام آباد(ویب ڈیسک)حکومت اور سرکاری ملازمین میں مذاکرات کامیاب ‘دھرناختم ‘گرفتار افراد کو رہاکردیاگیا‘سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں اضافے کے لئے قائم کی گئی مذاکراتی کمیٹی نے اعلان کیا ہے کہ گریڈ ایک سے 19 تک کے وفاقی ملازمین کو25فیصدایڈہاک ریلیف دیا جائے گا جو جون میں پیش کئے جانے والے بجٹ میں ضم کر دیا جائے گا‘

گریڈ 20اوراوپر کے ملازمین کو بجٹ میں اضافہ ملے گا‘ تمام معاملات بہتر طریقے سے طے پا گئے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار جمعرات کو وفاقی ملازمین سے مذاکرات کرنے والی حکومتی کمیٹی میں شامل وفاقی وزراء پرویزخٹک ‘شیخ رشید اور وزیرمملکت علی محمد خان نے سرکاری ملازمین کے نمائندوں کے ہمراہ مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا۔دوسری جانب وفاقی وزارت خزانہ نے وفاقی حکومت کے گریڈایک سے لیکرگریڈ19 تک کے ملازمین کی بنیادی تنخواہوں میں 25 فیصدایڈہاک ریلیف کی منظوری کی سمری وفاقی کابینہ کے سامنے رکھ دی ہے، وزارت خزانہ نے وفاقی حکومت کے گریڈایک سے لیکرگریڈ19 تک کے ملازمین(وفاقی سیکرٹریٹ وملحقہ محکمہ جات) کیلئے بی پی ایس 2017 کی بنیادی تنخواہ پر 25 فیصدتخفیف تفاوت الائونس دینے سے اتفاق کیاہے تاہم ان کااطلاق ان ملازمین پرہوگا جنہوں نے کبھی بھی بنیادی تنخواہ کے 100 فیصد یا اس سے زائد اضافی تنخواہ وصول نہ کی ہوں اور نہ ہی 31مارچ 2021 تک کارگردگی الاونس وصول کیا ہوں۔مشترکہ پریس کانفرنس میں شیخ رشید احمد نے کہا کہ ملازمین سے معاملات طے پا گئے ہیں‘ان فیصلوں کی منظوری وزیراعظم سے خود جا کر لی ہے‘پولیس اور سکیورٹی اہلکاروں کی تنخواہوں میں بھی اضافہ بجٹ میں کیا جائے گا۔ انہوں نے تمام گرفتار ملازمین کو رہا کرنے کا اعلان کرتےہوئے کہا کہ ایف آئی آرز واپس لے لی جائیں گی۔پرویز خٹک نے کہا کہ ہمارا فیصلہ ہے کہ 25 فیصد ایڈہاک ریلیف دیں گے۔

Comments are closed.