وفاق اور سندھ میں نیا تنازعہ کھڑا ہو گیا

کراچی (ویب ڈیسک)سندھ میں کوروناویکسینیشن کے معاملے پر صوبائی حکومت اور وفاق میں نیاتنازع سامنے آگیا ‘کراچی میں مسلم لیگ (ن) کے رہنماءاورسابق گورنر سندھ محمد زبیر کی بیٹی اور داماد کو ویکسین کا ٹیکا لگادیاگیا جبکہ وہ فرنٹ لائن طبی عملے کے رکن تھے اور نہ ہی عمر رسیدہ افراد تھے‘

ضوابط کی خلاف ورزی پرڈپٹی ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسرشرقی ڈاکٹر انیلہ قریشی کو معطل کر دیا گیا‘ وزیرصحت سندھ نے تحقیقاتی کمیٹی قائم کردی جبکہ صوبائی وزیرسیدناصرشاہ نے کہاہے کہ یہ ایک ڈاکٹر کا انفرادی فعل تھا جس پر ایکشن لیاگیاہے ‘محمد زبیر نے کہاہے کہ کورونا ویکسین کے معاملے سے ان کا کوئی تعلق ہے نہ ہی فیملی کو ویکسین لگوانے کیلئے انہوں نے کسی سے کوئی سفارش کی ہے‘ معاون خصوصی ڈاکٹر شہباز کا کہنا ہے کہ مافیاکو آج بھی ہیلتھ ورکرزکی بجائے اشرافیہ کی فکر ہے جبکہ وفاقی وزیراسدعمر نے کہاہے کہ صوبے کوروناویکسین کنٹرول نہیں کرسکےتو وفاق کنٹرول لےگا۔ وفاقی وزیر و سربراہ این سی او سی اسد عمر نے سندھ میں ضوابط کے برخلاف وی آئی پی شخصیات کو کورونا ویکسین لگانے کے معاملے کا نوٹس لیتے ہوئے کہا ہے کہ کوروناویکسین کےغلط استعمال پر وفاق خاموش تماشائی نہیں رہ سکتا‘ اس طرح امانت میں خیانت کرنا قوم کے ساتھ بہت بڑا ظلم اور دھوکا ہے‘صوبے کوروناویکسین کنٹرول نہیں کرسکےتو وفاق کنٹرول لےگا‘ابھی تک وزیراعظم، وزراء اورا ن کے خاندانوں نے ویکسین نہیں لگوائی‘ سندھ میں ایک دو فیملیوں کی بات نہیں ‘ میری معلومات کے مطابق بڑی تعداد میں ویکسین ایسے لوگوں کو لگائی گئی ہے جو ہیلتھ کیئر ورکرز نہیں ہیں نہ ان کی عمر زیادہ ہے‘سندھ میں این سی او سی کی ٹیم موبلائز بھی کردی گئی ہے ۔ اتوارکو ایک انٹرویو میں اسدعمر نے کہا کہ وی وی آئی پیز کو کورونا ویکسین لگاناافسوس کی بات ہے‘ سندھ حکومت کا سسٹم کیوں بریک ڈاؤن ہوا اس کا جواب سندھ حکومت دے گی۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *