ووٹ کو عزت دینے والوں کیلئے پریشان کُن خبر

لاہور (ویب ڈیسک) دیواریں گرنا شروع ہوگئیں، مسلم لیگ ن میں مزید جوڑ توڑ کے لئے حکومتی شخصیات متحرک ہوگئیں۔ ن لیگ کے مزید چار سے پانچ ارکان پنجاب اسمبلی سے حکومتی شخصیات نے رابطہ کرلیا، لاہور کے جلسے سے پہلے وزیراعلیٰ پنجاب سے ملاقات کروا نے کا امکان ہے ،ذرائع کے مطابق

لیگی ناراض گروپ کے نئے ایم پی ایز کا تعلق سنٹرل پنجاب کے تین اضلاع سے ہے ، جلد ان ایم پی ایز کی وزیراعلیٰ عثمان بزدار سے ملاقات کروائی جائے گی، ناراض ایم پی ایز نواز شریف کے حالیہ سخت بیانیے کے مخالف ہیں،مسلم لیگ ن کے پانچ ایم پی ایز پہلے ہی وزیر اعلیٰ پنجاب سے ملاقات کر کے لیگی قیادت کے بیانیے سے علیحدگی اختیار کر چکے ہیں۔ اس سے قبل پاکستان مسلم لیگ ن کے ناراض اراکین کا مزید لیگی اراکین کی حمایت کا دعویٰ، وزیراعلیٰ پنجاب سے ملاقاتیں جاری رکھنے کا فیصلہ۔ روزنامہ دنیا کے مطابق ناراض لیگی ارکان کی وزیراعلیٰ پنجاب سے قربتیں اورملاقاتیں رنگ لانے لگیں ناراض لیگی ارکان مسلم لیگ ن میں موجود مزید ناراض ساتھیوں کو اپنے گروپ میں شامل کرنے کے لئے متحرک ہو گئے۔ ناراض لیگی ارکان فی الحال پارٹی سے بھی رابطہ رکھیں گے اور وزیراعلیٰ عثمان بزدار سے بھی ملاقاتیں جاری رکھیں گے۔ ناراض لیگی گروپ کو پیپلزپارٹی کے ایک رکن پنجاب اسمبلی کی پہلے ہی حمایت حاصل ہے۔ یادرہے کہ ناراض ارکان کا گروپ وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار سے پہلے ہی3 ملاقاتیں کر چکاہے جس پر انہیں شوکاز نوٹس بھی جاری کیا گیا تھا۔

Sharing is caring!

Comments are closed.