ٹڈی دل کا خاتمہ یقینی : عمران حکومت نے ایسا فارمولا پیش کردیا کہ کورونا اور ٹڈیوں کے ستائے پاکستانی عوام دنگ رہ گئے

اسلام آباد (ویب ڈیسک) وفاقی حکومت نے ٹڈی دل سے کھاد تیار کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ اعلامیہ وزارت نیشنل فوڈ سکیورٹی کے مطابق ٹڈی دل سے کھاد بنانے کا منصوبہ منظوری کے مرحلے میں ہے۔ ٹڈی دل کو بائیو کمیوسٹ کھاد میں تبدیل کیا جائے گا۔ مقامی لوگوں کو روزگار ملے گا۔

کھاد بنے گی اور ٹڈی دل پر کنٹرول ہو گا۔ مقامی افرادی کی جمع کی گئی ٹڈیوں کو بائیو کمپوسٹ میں تبدیل کیا جائیگا۔ ٹڈیوں سے بنی کھاد میں 9 فیصد نائیٹروجن اور 7 فیصد فاسفورس ہوگا۔ ٹڈی دل سے اعلیٰ نامیاتی کھاد بنے گی‘ زرعی شعبے میں استعمال کیا جائے گا۔ پائلٹ پروجیکٹ کی ٹیسٹنگ چولستان اور تھر میں کی جائے گی۔ ٹڈیاں جمع کرنے کے تحت کمیونٹی کیلئے 50 مراکز بنائے جائیں گے۔ بہاولپور میں 29، عمر کوٹ میں 42 اور لکی مروت میں 42 مراکز ہوں گے۔ خاران ڈرائی لینڈ سینٹر آف بلوچستان پر 27 تربت 12 لسبیلہ 23‘ خضدار میں 26 مراکز ہوں گے۔ ٹڈیوں سے بنی کھاد سے فصلوں کی پیداواری صلاحیت 10 سے 15 فیصد زیادہ ہوگی۔ کیمیائی کھادوں کے استعمال میں 25 فیصد کمی آئے گی۔ منصوبے کے پہلے سال کے دوران ایک ارب روپے کی کھاد تیار کی جائے گی۔ ایک لاکھ ٹن ٹڈیوں سے 70000 ٹن کھاد تیار کی جائے گی۔ پراجیکٹ کے تحت فی خاندان اوسطاً 6 ہزار روپے ماہانہ کما سکتا ہے۔ کمیونٹی کو ادائیگی مناسب طریقے سے کی جائے گی۔

Sharing is caring!

Comments are closed.