پاکستانیوں کے لیے اب روزمرہ ضرورت کی کون کون سی چیزیں بھارت سے آیا کریں گی ؟

اسلام آباد(ویب ڈیسک)حکومت نے پیٹرول اورڈیزل کی قیمتوں میں کمی اوربھارت سے چینی اورکپاس کی درآمدکااعلان کیاہے، گندم کی امدادی قیمت 1800 روپے فی من مقررکی گئی ہے۔اس سال بھارت میں چینی پاکستان کے مقابلے میں 15 سے 20فیصد سستی ہے ‘نجی شعبہ انڈیا سے 5لاکھ میٹرک ٹن چینی درآمد کرسکے گا‘

ہندوستان سے تجارت کے نتیجے میں عوام اورچھوٹی صنعتوں کو فائدہ ہوگا۔مہنگائی اورقیمتوں میں اضافہ کے حوالے سے چیلنجوں پر قابوپانے کی بھرپورکوشش کریں گے‘ سخت اور بڑے فیصلوں کے بغیرقومیں آگے نہیں بڑھتیں‘ اسٹیٹ بینک کی خود مختاری کا فیصلہ عالمی معیار کے مطابق کیا‘بل پارلیمنٹ میں لے کر جائیں گے‘ سکوک بانڈز بھی جاری کریں گے لیکن ابھی تاریخ نہیں دے سکتے۔اسٹیل ملز کی بولی کاعمل رواں سال مکمل کرنے کی کوشش کریں گے ۔یہ بات وفاقی وزیرخزانہ حماداظہرنےوزیرخزانہ کا منصب سنبھالنے کے بعد بدھ کویہاں اپنی پہلی پریس کانفرنس میں کہی ہے۔ واضح رہے کہ بھارت سے 19 ماہ بعد پاکستان کی تجارت بحال ہونے جارہی ہے۔ حماد اظہر نے بتایا کہ کوویڈ19 کی عالمگیروبا کے بعد پاکستان سمیت پوری دنیا میں مہنگائی کی لہرآئی ہے‘ہم عوام کے درد کوسمجھتے ہیں،چینی، آٹا اورگھی کی قیمتوں میں اضافہ ہواہے، بطوروزیرخزانہ مجھے اورحکومت کی پوری اقتصادی ٹیم کواس بات کا احساس ہے اورہماری پوری کوشش ہے کہ مہنگائی پرقابوپایا جائے۔ہم دن رات محنت کرکے اس حوالہ سے کام کریں گے اورجہاں صوبائی حکومتوں کی ضرورت ہوگی ان سے بہتررابطہ کاری کے بعد اس حوالے سے فیصلے کئے جائیں گے ،ایف اے ٹی ایف کے حوالہ سے سوال پرانہوں نے کہاکہ ایکشن پلان کے مطابق تین چیزیں رہ گئی ہیں جو جون تک مکمل کرلیں گے،اس کے ساتھ ساتھ ایک اورایکشن پلان بھی چل رہاہے،ہم پوری محنت سے آگے جارہے ہیں۔ اسٹیٹ بینک ترمیمی ایکٹ سے متعلق سوال پرانہوں نے کہا کہ اس حوالہ سے پارلیمان میں فیصلہ سازی ہوگی اورمتعلقہ فریقین کی تجاویز کرمدنظررکھا جائیگا،تاہم اس حوالہ سے جو سنسنی پھیلائی جارہی ہے وہ درست نہیں ہے۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *