پاکستان سیاست میں گرمی :

اسلام آباد (ویب ڈیسک) بلوچستان نیشنل پارٹی (بی این پی مینگل گروپ) کے بعد بلوچستان کی ایک اور سیاسی جماعت جمہوری وطن پارٹی بھی حکمران جماعت پاکستان تحریک انصاف سے ناراض ہوگئی۔جمہوری وطن پارٹی کے اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ افسوس سے کہنا پڑ رہا ہے ہم سے کیا گیا ایک وعدہ بھی پورا نہیں کیا گیا،

پارٹی کی سینٹرل کمیٹی فیصلہ کرے گی کہ حکومت کا مزید ساتھ دیں یا اپوزیشن بینچوں پر بیٹھیں۔اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ جے جمہوری وطن پارٹی وفاقی حکومت کی یقین دہانی پر وفاقی حکومت میں شامل ہوئی تھی، نوابزادہ شاہ زین بگٹی نے پارٹی کی سینٹرل کمیٹی کا اہم اجلاس بلانے کا فیصلہ کرلیا ہے۔خیال رہے کہ آج بلوچستان نیشنل پارٹی مینگل گروپ نے بھی وعدے پورے نہ ہونے پر وفاقی حکومت سے علیحدگی کا اعلان کیا ہے۔بی این پی کی علیحدگی سے قبل تحریک انصاف کی حکومت کو قومی اسمبلی میں تمام اتحادیوں کی سپورٹ کے بعد 186 نشستیں حاصل تھی جو اب بی این پی کی حکومت سے دستبرداری کے بعد 182 رہ گئی ہیں۔اس کے علاوہ متحدہ قومی موومنٹ کے 7، مسلم لیگ ق کے 5، بلوچستان عوامی پارٹی کے 5، گرینڈ ڈیموکریٹک الائنس کے 3 جبکہ جمہوری وطن پارٹی اور عوامی مسلم لیگ کے ایک ایک رکن اسمبلی کی سپورٹ تحریک انصاف کے ساتھ ہے اور 4 آزاد امیدوار بھی تحریک انصاف کے ساتھ ہیں۔اس کے ساتھ اپوزیشن جماعتوں کے پاس قومی اسمبلی میں مجموعی نشستوں کی تعداد 156 ہے جن میں سے ن لیگ کی 84، پیپلز پارٹی کی 55، متحدہ مجلس عمل کی 16 اور عوامی نیشنل پارٹی کی ایک نشست ہے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.