پاکستان کے اہم اور بڑے تعلیمی ادارے کو بند کر دیا گیا

لاہور (ویب ڈیسک) ملک میں کرونا کے کیسز آہستہ آہستہ کمی کی طرف جا رہے ہیں مگر ابھی بھی مریضوں کی مکمل صحتیابی کے لئے حکومت اپنی بھر کوششیں کر رہی ہے۔مسلسل کئی مہینوں لاک ڈائون کے باعث تعلیمی اداروں کو بند کر دیا گیا تھا جن کو اب مختلف مراحل سے کھول دیا

گیا ہے اور ان تعلیمی اداروں کو سختی سے ایس او پیز پر عمل کرنے کا ھکم دیا ہے۔پشاور میں کرونا وائرس کی موجودہ صورتحال کے پیش نظر خیبر میڈیکل کالج کو 2 ہفتوں کے لیے بند کر دیا گیا ہے۔اس سلسلے میں نگرانی کے لئے کئی ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں جو روزانہ کی بنیاد پر حکومتی اور نجی تعلیمی اداروں میں جا کر ایس وی پیز پر عملدرامد کی لئے کی گئی تدابیر کو مانیٹر کرتی ہیں۔ ڈین خیبر میڈیکل کالج نے کالج کی بندش کا حکم نامہ جاری کردیا جس کے مطابق چیئرمین بورڈ آف گورنرز، محکمہ صحت اور چیئرمین انفیکشن کنٹرول کمیٹی کی مشاورت سے کالج بند کیا گیا ہے۔ اعلامیے کے مطابق کالج میں ایس او پیز پر سختی سے عمل درآمد کیا جا رہا ہے جب کہ شعبہ فارنزک میڈیسن کی خدمات 24 گھنٹے جاری رہیں گی، اسی طرح شعبہ پیتھالوجی کا عملہ بلڈ بینک اور لیبارٹریز میں موجود رہے گا۔ دوسری جانب ایک اور خبر کے مطابق پورے ملک میں کچھ روز قبل تعلیمی اداروں کو کھولے جانے کے بعد وہاں کورونا کیسز سامنے آنے کے بعد انہیں بند کیے جانے کا سلسلہ جاری ہے ۔ جن سکولوں و کالجز میں ایس او پیز پر عملدرآمد نہیں ہوتا اور بے احتیاطی برتی جارہی ہے وہاں کورونا کیسز سامنے آنے کی شرح زیادہ ہے لیکن جہاں جہاں احتیاط کا دامن ہاتھ سے نہیں چھوڑا جارہا ان شہروں اور وہاں کے تعلیمی اداروں میں حالات کافی حد تک قابو میں ہیں ۔ دریں اثناء صوبائی وزیر صحت پنجاب ڈاکٹر یاسمین راشد نے سردیوں میں کورونا کیسز میں اضافے کی جانب اشارہ کیا ہے ۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *