پاکستان کے اہم شہر سے انوکھی خبر

کراچی (ویب ڈیسک) سندھ ہائیکورٹ نے کم عمر بچی کا ب فارم اسکی خالہ کے شناختی کارڈ پر جاری کرنے کا حکم دے دیا ، تفصیلات کے مطابق درخواست گزار ماہم رحمٰن کی جانب سے ب فارم کے اجراء کیلئے دائر درخواست کی سندھ ہائیکورٹ میں سماعت ہوئی۔بچی کے وکیل نے بتایا

کہ ماہم کے والدین اس دنیا میں نہیں رہے مگر اس نے آگے بڑھنا ہے تعلیم کا سلسلہ جاری رکھنا ہے اور اسکے بعد اس کا شناختی کارڈ بننے کا مرحلہ پیش آئے گا ۔ لیکن اس کا ب فارم بنانے سے نادرا انکاری ہے ، لہذا خصوصی حکم جاری کیا جائے ۔ جس پر عدالت نے نادرا کو خالہ کے شناختی کارڈ پر یتیم بچی کا 10 روز میں ب فارم جاری کرنے کا حکم دے دیا۔ماہم کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ بچی کا کوئی وارث نہیں، رشتہ داروں کے گھر میں رہتی ہے، 3 ماہ کی عمر میں والد اور 3 برس کی عمر میں والدہ کا انتقال ہوا۔ عدالت نے وکیل بورڈآفس سے استفسار کیا کہ ایڈمٹ کارڈ کیلئے ب فارم کیوں ضروری ہے؟ جس پر وکیل نے عدالت کو بتایا کہ بچے کی شناخت کے لیے ب فارم ضروری ہے۔ اس موقع پر ناردا کے وکیل نے عدالت میں کہا کہ عدالت حکم دے تو بچی کا ب فارم بنانے کے لیے تیار ہیں۔ جس پر عدالت نے بچی کی سرپرست خالہ کےشناختی کارڈ پر باردا کو 10روزمیں ب فارم جاری کرنے کا حکم دے دیا۔

Comments are closed.