پنجاب کے بعد ایک اور صوبے میں پابندیوں کا اعلان کردیا گیا

پشاور (ویب ڈیسک) خیبر پختونخوا میں کورونا وائرس کی وباء کی تیسری لہر کے پیش نظر پابندیاں عائد کر دی گئیں، انتظامیہ کی جانب سے جاری حکم نامے میں کہا گیا ہے کہ پشاور، مردان، نوشہرہ، ایبٹ آباد، سوات، صوابی اور ملاکنڈ میں مارکیٹیں 8 بجے بند کر دی جائیں۔حکم نامے کے مطابق

ادویات، بیکری، کریانہ اور دیگر ضروری اشیاء کی دکانیں کھلی رہیں گی،جبکہ صوبے میں شادی ہالز اور ریسٹورنٹس میں تقریبات پر مکمل پابندی ہوگی۔اس کے علاوہ شادی کی تقریبات کھلے مقامات پر کی جاسکیں گی، کھلے مقامات پر تقریبات میں 300 افراد کو شرکت کی اجازت ہوگی۔حکم نامے میں کہا گیا ہے کہ صوبے میں ہر قسم کے ثقافتی پروگرامز اور کھیلوں کے انعقاد پر پابندی ہوگی، جبکہ مزارات اور سینما گھر بند رہیں گے، پبلک پارکس کو بھی شام 6 بجے بند کر دیا جائے گا۔انتظامیہ کے حکم نامے میں مزید کہا گیا ہے کہ حفاظتی ماسک اور سماجی فاصلے پر سختی سے عمل درآمد کرایا جائے، صوبہ بھر میں ریسٹورینٹ کے اندر کھانا کھانے پر پابندی عائد ہوگی۔واضح رہے کہ پاکستان میں کورونا وائرس سے مزید 29 افراد انتقال کرگئے ہیں، گزشتہ 24 گھنٹے کےدوران کورونا کے 2 ہزار 253 نئے مریض سامنے آئے ہیں، 14 مارچ کو 44 ہزار سے زیادہ کورونا ٹیسٹ کیے گئے، مثبت کیسز کی شرح 5اعشاریہ 1 فیصد رہی۔خیبر پختون خوا میں کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد 76 ہزار104ہو چکی ہے، جبکہ اس سے کُل اموات 2 ہزار 159ہو گئیں۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *