پوری دنیا حیرت میں مبتلا

کابل(ویب ڈیسک )امریکہ پر 11ستمبر کے اٹیکس کی 20ویں برسی کے موقع پر تالبان نئی کابینہ کی تقریب حلف برداری کے انعقاد پر غور کررہے ہیں تاہم روس نے تقریب میں شرکت سے انکار کردیا ہے ،واضح رہے کہ ابتدائی طور پر روس نے تقریب میں مشروط شرکت کا اعلان کیا تھا ۔

تاصیل ت کے مطابق ہفتے کے روزامریکہ کی سرزمین اٹیکس کی 20ویں برسی ہے۔نیویارک میں ورلڈ ٹریڈ سنٹر اورواشنگٹن کے نواح میں ورجینیا میں پینٹاگان کی عمارت پر طیارہ اٹیکس میں قریباً تین ہزارافراد جان بحق ہوگئے تھے۔ اس کارروائی کے ردعمل میں امریکہ نے شرپسندوں کی بیخ کنی کے نام پراکتوبر 2001میں افغانستان پرفوجی چڑھائی کردی تھی۔اب تالبان اسی روز اپنی حکومت کی شروعات چاہتے ہیں اور اسی روز امارت اسلامی کے وزراء اپنے عہدوں کا حلف اٹھائیں گے۔میڈیا رپورٹس کے مطابق تالبان نے عبوری کابینہ کی افتتاحی تقریب میں قطر، ایران، ترکی، روس اور چین کو مدعو کیا ہوا ہے۔روسی صدارتی محل کے ترجمان دمتری پیسکوف نے کہا ہے کہ روس افغانستان میں تالبان حکومت کی تقریب حلف برداری میں شامل نہیں ہوگا۔انھوں نے کہا کہ ہم نہیں جانتے کہ یہ صورتحال کیا رخ اختیار کرے گی۔ اسی لیے ہمارے خیال میں ہمارے لیے یہ سمجھنا ضروری ہے کہ افغانستان کی موجودہ قیادت کے اقدامات کیا ہوں گے۔دوسری جانب تالبان کے ثقافتی کمیشن کے رکن انعام اللہ سمنگانی نے کہا ہے کہ 11ستمبر کو تقریب حلف برداری کی خبریں درست نہیں۔ ایک پیغام میں انہوں نے 11ستمبر کو تقریب حلف برداری کی خبر کو افواہ قرار دیااورکہا کہ گزشتہ دنوں کابینہ کا اعلان منسوخ کیا گیا تھا اور پھر بعدازاں قیادت کی منظوری کے بعد نئی کابینہ کے ناموں کا اعلان کیا گیا،کابینہ نے اپنا کام شروع کردیا ہے اور 11 ستمبر کو تقریب حلف برداری کی خبریں درست نہیں۔دوسری جانب روسی میڈیا کا کہنا ہے کہ تالبان نے 11 ستمبر کو افغانستان کی عبوری کابینہ کی تقریب حلف برداری ملتوی کردی،خبریں سامنے آئی تھیں کہ نئی افغان حکومت نائن الیون کے 20 سال مکمل ہونے کے روز حلف اٹھائے گی تاہم اب روسی نیوز ایجنسی نے دعویٰ کیا ہے کہ تالبان نے 11 ستمبر کو عبوری کابینہ کی تقریب حلف برداری ملتوی کردی ہے۔

Comments are closed.