ڈاکٹر خان کس حال میں اور کیا کرتے ملے ؟

لاہور (ویب ڈیسک) مورخہ 5دسمبر 2021ء بروز اتوارکی صبح نماز استغفار اور نماز تہجد پڑھنے کے بعد میں نماز فجر کی ادائیگی کے لیے مسجد گیا وہاں سے واپسی کے بعد نماز اشراق کے نوافل ادا کرنے کے بعد باوضو حالت میں ہی سو گیا ،نیند کی حالت میں ہی ایک خواب شروع ہوا جس کی تفصیل کچھ یوں ہے۔

نامور کالم نگار اسلم لودھی اپنے ایک کالم میں لکھتے ہیں ۔۔۔۔۔۔۔۔ میں کسی ایسی جگہ پر موجود تھا جسے دیکھ کر جنت کا گمان ہوتا تھا۔ وہاںہر طرف پھول ،پودے اور انسانی استعمال کی ہر چیز وافر تعداد میں موجود تھی ۔ بھنے ہوئے گوشت کی بڑی بڑی ڈشیں حتی کہ ،کھانے پینے کی ہر وہ چیز موجود تھی جسے ہم دنیا میں کھانے کی تمنا رکھتے ہیں لیکن کھا نہیں سکتے۔ میں نے بھی ڈرتے ڈرتے وہاں رکھی ہوئی برفی کھائی جو بہت ہی لذیز تھی۔ ابھی حیران کن واقعات کا سلسلہ جاری تھا کہ محسن پاکستان اورعظیم ایٹمی سائنس دان ڈاکٹرعبدالقدیر خان کی آمد کا اعلان ہوا۔چند ہی لمحوں وہ تشریف لے آئے اور ایک بلند جگہ پر بیٹھ گئے، لوگ ان سے جوق در جوق مصافحہ کررہے تھے ۔جب مجھے ڈاکٹر عبدالقدیرخان دکھائی دیئے تو میں بھی ان سے ملنے کے لیے آگے بڑھا ایک شخص نے مجھے آگے جانے سے روکا۔ میںابھی سوچ ہی رہا تھا کہ ڈاکٹرخان کو کیسے ملا جائے۔اسی اثنا میں ڈاکٹر خان نے اشارہ کرکے مجھے بلالیا ۔اس خصوصی محبت پر وہاں پر موجود سب لوگ حیران تھے،ڈاکٹر خان نے مجھے اپنے پاس بیٹھنے کے لیے کہااور فرمایا تم نے میری کتابوں پر کمال تبصرہ کیاہے،میں نے کہا جی جو کچھ مجھ سے ہوسکا، وہ میں نے کردیا ۔پھر انہوں نے مجھ سے پوچھا تم کتابیں بھی لکھتے ہو، میں نے کہا جی میں نے 35کتابیں لکھی ہیں ۔جن میں افواج پاکستان کے لیے جان نثار کرنے والے جوانوں کے حوالے سے دس کتابیں بھی شامل ہیں۔ میری بات سننے کے بعد ڈاکٹر عبدالقدیرخان نے فرمایا جبارمرزا صاحب نے تو مجھے آپ کے بارے میں نہیں بتایا ۔میں نے کہا سر وہ شاہد بھول گئے ہونگے ۔انہوں نے پھر فرمایا۔ اپنی کتابیں لاکریہاں بھی رکھو۔اس کے بعد منظر بدل گیا اور دن کے ساڑھے نو بجے میں نیند سے بیدار ہوگیا لِیکن جنت کی سیر کرنے کے ساتھ ساتھ محسن پاکستان ڈاکٹر عبدالقدیر خان سے ملاقات کے خوشگوار تاثر نے مجھے حقیقی معنو ں میں خوش کردیا۔ میں فوری طورپر کمپیوٹر پربیٹھا اور بھولنے سے پہلے خواب کو کاغذ پر منتقل کرلیا۔اس خواب کے بعد مجھے پختہ یقین ہوگیا ہے کہ محسن پاکستان اورمایہ ناز ایٹمی سائنس دان ڈاکٹر عبدالقدیر خان اللہ تعالی کے فضل وکرم سے جنت الفردوس میں ہیں ۔