ڈاکٹر ماہا شاہ کے حوالے سے شرمناک انکشافات

کراچی (ویب ڈیسک )کراچی کی ایک عدالت نے ڈاکٹر ماہا شاہ کی موت کے کیس کا حتمی چالان منظور کرتے ہوئے حتمی چالان ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج ساؤتھ کو ارسال کردیا۔حتمی چالان میں ڈاکٹر جنید، ڈاکٹرسیدوقاص رضوی،تابش یاسین اور سعد ناصر کو ملزمان نامزد کیا گیا ہے۔ہفتے کو جوڈیشل مجسٹریٹ جنوبی کی عدالت نے ڈاکٹر ماہا شاہ

کی پراسرار موت کے کیس کی سماعت کی۔سماعت کے موقع پر مقدمے کے تفتیشی آفیسر کی جانب سے مقدمے کا حتمی چالان پیش کیا گیا۔چالان میں کہا گیا ہے کہ ڈاکٹر ماہا پہلے ہی پیغام دے چکی تھی کہ جنید میری موت کی وجہ ہوگی ، ڈاکٹر ماہا نےدلبرداشتہ ہوکر خود موت کو سینے سے لگانا جنید کے ساتھ رہنے سے بہتر سمجھا جبکہ متوفیہ کئی چیزوں کی اڈکٹڈ تھی ،متوفیہ کی سی ڈی آر سے ثابت ہوا کہ وہ ایسے گروہ سے رابطے میں تھیں،ماہا شاہ کو ملزمہ انمول عرف پنکی کے کہنے پر ایسی چیزیں فراہم کی جاتی تھی، متوفیہ کے نمونے لیبارٹری بھجوائے گئے تھے، ملزم جنید اور وقاص کو 5 مرتبہ نمونے لینے کیلئے نوٹس جاری کیے لیکن وہ پیش نہیں ہوئے، دوران تفتیش جنید انکشاف کر چکا ہے متوفیہ سے گہری دوستی تھی۔ چالان میں مزید کہا گیا ہے کہ ایسالگتا ہے ملزمان غلط فعل کے مرتکب ہوئے ہیں اور ملزمان ٹیسٹ کیلئے ٹال مٹول سے کام لے رہے ہیں ۔چالان میں ملزمان کے شواہد چھپانے کا انکشاف کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ ملزمان ثبوت جرم، شواہد غائب کرنے کا باعث بن رہے ہیں ، ملزم جنید نے ڈاکٹر ماہا شاہ کو زدوکوب کرنے کا بھی انکشاف کیا تھا ، ملزم جنید متوفیہ کو زدوکوب کرتا رہتا تھا اور متوفیہ کئی کئی دن ملزم جنید کے ساتھ رہتی رہی ہے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.