ڈسکہ الیکشن میں پی ٹی آئی امیدوار کی حمایت کرنے والے اعلیٰ پولیس افسر کو حکومت نے انعام سے نواز دیا

لاہور (ویب ڈیسک) ڈسکہ سے رکن قومی اسمبلی نوشین افتخار نے کہا ہے کہ پنجاب کے سیکرٹری،اسوقت کے کمشنر گوجرنوالہ، ریجنل پولیس آفیسر (آر پی او) نے میرے الیکشن میں جانبدارانہ کردار ادا کیا جسکے انعام میں انہیں آج اہم اضلاع میں تعینات کردیا گیا ہے، الیکشن ڈیوٹی کے دوران ڈی ایس پی نے میرے بھائی سید عطاء الحسن

کو اٹھایا، مجھے تنگ کیا اور میری گاڑی روک کرسرعام زندگی سے محروم کرنے کی وارننگ دی گئی، میرے گھر کے پانچ افراد پر پولیس نے جھوٹے مقدمات بنائے، میرے ساتھ ہونیوالے ظلم کا وقت حساب قریب ہے، الیکشن کمیشن کی ڈسکہ الیکشن رپورٹ نے تحریک انصاف کو بے نقاب کر دیا ہے۔پارلیمنٹ ہاؤس میں صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے ڈسکہ الیکشن کی فاتح رکن قومی اسمبلی نوشین افتخار نے کہا ہے کہ میرے حلقے کے چئیرمینز کو الیکشن سے تین دن اٹھا لیا گیا ،تحصیلدار کو بھیج کر میرے حامیوں کی دوکانوں کو تالے لگوا دیئے گئے اور میرے بینرز اتروائے گئے پنجاب کے سیکرٹری نے کمشنر آر پی او ڈپٹی کمشنر ڈی پی او کو میٹنگز میں براہ راست ہدایات جاری کیں الیکشن کمیشن رپورٹ میں انتظامیہ کی جانبداری اور میرے ساتھ کی گئی ناانصافی کا پول کھل گیا ہے ،ذمہ داران کیخلاف آئین اور قانون کے مطابق کاروائی کا مطالبہ ہے۔

Comments are closed.