ڈی جی آئی ایس پی آر کے ایک بیان نے افواہوں کا خاتمہ کردیا

راولپنڈی(ویب ڈیسک)پاک فوج کے ترجمان میجر جنرل بابر افتخار نے کہا ہے کہ فوج کا سیاست میں کوئی کردارہے اورنہ ہی اسے سیاست میں گھسیٹنے کی کوشش کی جائے‘کسی سے کوئی بیک ڈوررابطہ نہیں ‘ ہمیں معاملے سے دور رکھا جائے۔حکومت نے فوج کو الیکشن کرانے کی ذمہ داری سونپی‘ فوج نے

پوری ذمہ داری اور ایمانداری سے الیکشن کرائے‘ پھر بھی کسی کو اعتراض ہے تو ادارے موجودہیں ‘ان سے رجوع کیاجائے ‘ الزامات لگانا اچھی بات نہیں‘فوج حکومت کا ماتحت ادارہ ہے۔حکومت تمام الزامات کا بہتر انداز میں جواب دیکر اچھی طرح ہمارادفاع کررہی ہے ‘فوج اپوزیشن کے نام نہادالزامات کاجواب نہیں دے گی جس میں حقیقت اور وزن نہ ہو‘فوج مخالف بیانات پر تشویش ضرور ہے مگرفوج کامورال بلند ہے اور وہ اپنا کام کررہی ہے۔مولانا فضل الرحمٰن کے پنڈی آنے کی کوئی وجہ نظرنہیں آتی اوراگر وہ آئے توہم ان کوچائے پانی پلائیںگے‘ ان کی اچھی دیکھ بھال کریں گے‘ماضی کے مقابلہ میں آج پاکستان میں بدامن عناصر کاکوئی منظم نیٹ ورک موجودنہیں ہے۔کراچی میں امن و امان کی صورتحال ترقی یافتہ ممالک کے دارالحکومتوں سے بھی بہتر ہے‘بلوچستان میں کچھ عرصے سے ملک دشمن قوتیں امن و امان کی صورتحال خراب کرنے کے در پے ہیں‘فورسزان عزائم کو ناکام بنانے کے لیے شب و روز مصروف ہیں۔میجر جنرل بابرافتخار کا مزید کہناتھاکہ دشمن قوتیں ہمیں ناکام بنانے میں مصروف ہیں اورہمیں تقسیم کرنے کے درپے ہیں‘ ہم سب کا اجتماعی کردار اورذمہ داریاں ہیں‘ منزل ایک ہے، پاکستان کوکامیاب بنانے میں اپنا اپنا کردار ادا کرنا ہے‘گزشتہ چندسالوں میں ہم نے اپنی توجہ بلوچستان کی طرف منتقل کی۔جتنا بڑاصوبہ ہے وہاں ایک ایک چپہ پر سنٹری کھڑاکرنا ممکن نہیں ہے لیکن اس کے باوجود حفاظتی انتظامات کومضبوط کیا جارہاہے ، انشاء اللہ حالات میں مزیدبہتری آئیگی‘ہم اس بات کویقینی بنائیں گے کہ بلوچستان محفوظ ہوں کیونکہ بلوچستان پاکستان کامستقبل ہے۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *