کالے کرتوت آپ کو حیران کر دیں گے

کراچی (ویب ڈیسک) کراچی میں کسٹمز انٹیلی جنس کے ایک مخبر کو اٹھائے جانے اور زندگی سے محروم کردیے جانے کے مقدمے میں سابق ایس ایچ او سچل اور جعلی میجر کے ساتھ گرفتار ملزمہ فوزیہ ایک چینی باشندے کی اہلیہ ہے۔مقدمے کی تفتیش کاؤنٹر ٹیررازم ڈیپارٹمنٹ کے تفتیشی افسر راجہ عمر خطاب کی

نگرانی میں پولیس کی خصوصی ٹیم کر رہی ہے۔پولیس ذرائع کے مطابق مخبر فضل کے کیس میں گرفتار ملزمان کی دستاویزات کی چھان بین کے دوران یہ انکشاف سامنے آیا کہ مسیحی برادی سے تعلق رکھنے والی 40 سالہ ملزمہ فوزیہ نے 2018ء میں چینی شہری لیان ژیگسن سے شادی کی تھی۔ملیر بلوچ محلہ گڈاپ کی رہائشی فوزیہ نے 11 مئی 2019ء کو چینی باشندے سے شادی کی، نادرا کے ریکارڈ میں رجسٹریشن کرائی۔ملزمہ فوزیہ کا شوہر لیان ژیگسن چین چلا جاتا تھا تو وہ کراچی میں غیر قانونی سرگرمیوں میں ملوث ہو جاتی تھی۔راجہ عمر خطاب کے مطابق گرفتار ملزمہ سابق ایس ایچ او سچل ہارون کورائی کی ٹیم میں ان کے ساتھ پولیس افسر بن کر جعلسازی کرتی رہی۔ملزمہ فوزیہ نے گرفتار جعلی میجر عثمان کیلئے بھی کام کرنے اور کئی غیر قانونی کارروائیوں اور وارداتوں کا اعتراف کیا۔سی ٹی ڈی افسر راجہ عمر خطاب کی نگرانی میں پولیس کی خصوصی ٹیم نے شواہد ملنے پر فضل کیس میں 6 ملزمان کو گرفتار کیا تھا، سابق ایس ایچ او سچل ہارون کورائی، فوزیہ، عثمان عرف میجر و دیگر ملزمان قید میں ہیں۔