کامران خان نے اندر کی گیم سامنے رکھ دی

کراچی(ویب ڈیسک )معروف تجزیہ کار کامران خان نے کہا ہے کہ حکومت نے بشیر میمن کو ریٹائرمنٹ سے چند ہفتے پہلے گھر بھیج کر ناانصافی کی ۔نجی نیوز چینل کے پروگرام میں تجز یہ پیش کرتے ہوئے کامران خان نے کہا کہ جب عمران خان نے اپنے عہدے کا حلف اٹھایا تو انہوں نے

ضروری سمجھا کہ بشیر میمن ڈی جی ایف آئی اے کے طور پر کام جاری رکھیں ،اس دوران بشیر میمن اومنی گروپ کی منی لانڈرنگ ،جعلی بنک اکاونٹس اور انسداد بدعنوانی کے حوالے سے اہم کیسز کی تحقیقات کر رہے تھے ۔کامران خان نے کہا کہ کچھ عرصے بعد جج ارشد ملک کی ویڈیو کا معاملہ سامنے آیا اور تحقیقات کی بات ہوئی تو اس حوالے سے بشیر میمن اور حکومت کا موقف مختلف تھا جس کے بعد حکومت نے تعلقات خراب ہونے پر بشیر میمن کو ریٹائرمنٹ سے چند ہفتے پہلے سبکدوش کردیا ،شائد یہ حکومت کی جانب سے ناانصافی تھی ۔تجزیہ کار نے بتا یا کہ بشیر میمن اور حکومت کے درمیان اصل میں معاملات اس وقت خراب ہوئے جب ریٹائرمنٹ کے بعد بشیر میمن گھر چلے گئے لیکن حکومت کی جانب سے ان کی پنشن روک لی گئی،اب بشیر میمن کے بیانات اس ساری صورتحال کا رد عمل ہیں جس میں حیرانگی کی کوئی بات نہیں ہے ۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *