کتنی رقم ادا کرکے کام پکا کر لیا گیا ؟

اسلام آباد (ویب ڈیسک) وفاقی ترقیاتی ادارے سی ڈی اے کی انتظامیہ نے زون فور کے مضافاتی علاقے بنی گالہ میں واقع وزیراعظم پاکستان عمران خان کے گھر کا نقشہ تین سال بعد منظور کر لیا ہے۔ عمران خان کو نقشے کی منظوری کے لئے وائلیشن کی مد میں 12لاکھ چھ ہزار روپے

سی ڈی اے کو ادا کرنا پڑے ہیں۔ سی ڈی اے کے پاس زون فور میں گھروں کی ریگولرائزیشن کے لئے پانچ سو سے زائد درخواستیں التواء میں پڑی ہیں۔ نوائے وقت کو دستیاب دستاویزات کے مطابق سی ڈی اے کی انتظامیہ نے وزیراعظم کے بنی گالہ میں واقع گھر کو ریگولرائز کردیا ہے۔ وزیراعظم نے تین سال قبل اپنے گھر کو ریگولرائز کروانے کے لئے سی ڈی اے سے رجوع کیا تھا تاہم سی ڈی اے نے ان کی درخواست پر اعتراضات عائد کردیئے تھے تاہم عمران خان کے وزیراعظم بننے کے بعد سی ڈی اے اپنے اعتراضات پر نظر ثانی کرتے ہوئے اب ان کے گھر کو ریگولرائز کردیا ہے تاہم اسی زون میں واقع پانچ سو دیگر درخواستگزاروں کی استدعا پر سالوں گزر جانے کے بعد تاحال کوئی فیصلہ نہیں کیا گیا ہے ۔ وزیرا عظم کے گھر کا نقشہ ترمیم شدہ بلڈنگ ریگولیشن 2020 کے تحت منظور کیا گیا۔ نقشہ منظور کروانے کے لیے عمران خان نے 1206000روپے جرمانہ بھی ادا کیا۔ منظور شدہ نقشے میں وزیراعظم کے گھر میں 6 بیڈ روم، ڈرائنگ روم،  ڈائنگ ہال، پلے روم، دفتر اور ریسیپشن بھی شامل ہے۔ نقشہ سی ڈی اے کے بلڈنگ کنٹرول ڈپارٹمنٹ نے منظور کیا۔

Comments are closed.