کراچی سے ناقابل یقین خبر

لاہور (ویب ڈیسک) پاکستان کے سب سے بڑے شہر کراچی میں وفاقی تحقیقاتی ادارے ایف آئی اے نے ایک خاتون کو اپنے ’سابقہ بوائے فرینڈ‘ کی غلط قسم کی ویڈیو اور تصاویر شیئر کرنے کے الزام میں گرفتار کیا ہے۔ایف آئی اے سائبر کرائم ونگ نے متاثرہ شخص کی مدعیت میں مقدمہ درج کیا

نامور صحافی ریاض سہیل بی بی سی کے لیے اپنی ایک رپورٹ میں لکھتے ہیں ۔۔۔۔۔۔ جس میں انھوں نے خاتون پر اس کام کے الزامات عائد کیے ہیں۔مدعی کے مطابق خاتون ان کی سابقہ گرل فرینڈ ہیں۔مدعی نے ایف آئی اے کو بتایا ہے کہ ان کی سابقہ گرل فرینڈ سے ان کی چھ سال سے دوستی تھی اور اس عرصے میں وہ ان کے گھر بھی جاتے رہے اور وہ دونوں واٹس ایپ کے ذیعے رابطے میں تھے۔مدعی نے الزام عائد کیا کہ خاتون نے ویڈیو پر انھیں بے لباس ہونے کو کہا اور پھر ان کی ویڈیو ریکارڈ کرلی جس سے وہ لاعلم تھے۔انھوں نے کہا کہ کچھ دنوں کے بعد خاتون نے رقم کا تقاضہ کیا اور جب انھوں نے انکار کیا تو اُس نے وارن کرنا شروع کردیا اور ان کی ویڈیو فیس بک پر ڈال دی۔ایف آئی اے میں درج ایف آئی آر کے مطابق اس شکایت کی تصدیق کے بعد خواتین افسر اور اہلکاروں پر مشتمل ٹیم نے نیو کراچی میں ایک مقام پر چھاپا مارا اور خاتون کو ان پر عائد الزامات کی تفصیلات سے آگاہ کیا جسے انھوں نے قبول کرنے سے انکار کیا۔ایف آئی اے کی ٹیم نے اس خاتون سے موبائل فون ان کے حوالے کرنے کا مطالبہ کیا اور ٹیم نے تین فون ضبط کیے ہیں۔حکام کے مطابق اس خاتون کو بعد میں ایف آئی اے سائبر سیل میں لایا گیا جہاں دوران تفیش یہ بات معلوم ہوئی کہ ان کے موبائل میں فیس بک کی وہ آئی ڈی فعال تھی جس کے ذریعے نازیبا ویڈیو براڈ کاسٹ کی گئی اور وہ ویڈیو فون پر بھی موجود تھی۔ایڈیشنل ڈائریکٹر سائبر کرائم سرکل کے مطابق گرفتار خاتون ایک سکول میں پڑھاتی ہیں اور مبینہ طور پر اس سے قبل مدعی کے ایک اور قریبی رشتہ دار کو بھی اسی طرح گھیر کر پیسے بٹور چکی ہیں۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *