کراچی والوں کا بڑا نقصان : افسوسناک حقائق

لاہور (ویب ڈیسک) کراچی میں ایک خاتون سماجی کارکن کو زندگی سے محروم کر دیا گیا ، اب پتہ چلا ہے کہ ملزم مذکورہ لڑکی کا ہمسایہ ہے ۔ یہ واقعہ منگل کی دوپہر کو نیو کراچی سیکٹر فائیو جے میں پیش آیا ہے، سر سید پولیس کے مطابق 24 سالہ صبا اسلم کہیں جانے کے لیے گھر سے نکلی تو

ملزم نے ان پر اٹیک کرکے زخمی کردیا۔سماجی ادارے چھیپا ویلفیئر کی ایمبولینس وہاں پہنچی اور عباسی ہسپتال منتقل کیا، تنظیم کے ورکر شاہد چھیپا نے بتایا کہ دوپہر کو ساڑھے بارہ بجے کا وقت تھا وہ وہاں پہنچے تو لڑکی بے جان حال میں گلی میں پڑی تھی ۔’لوگوں نے بتایا کہ جیسے وہ باہر نکلیں تو موٹرسائیکل پر دو لوگ آئے جنہوں نے ماسلک لگائے ہوئے انھوں نے کسی چیز سے لڑکی کی کمر پر ضرب لگائی جو جان لیوا ثابت ہوئی۔‘ایس ایچ او سر سید نے بی بی سی کو بتایا کہ ملزم بدتمیز ہے اس سے قبل بھی صبا سے اس کی تلخ کلامی ہوئی تھی۔ لڑکی کے خاندان والے ایف آئی آر درج کرانے کے لیے تیار نہیں تھے اس لیے ریاست کی مدعیت میں مقدمہ درج کیا گیا ہے کیونکہ یہ ایسا سنگین جرم ہے جس کے چشم دید گواہ بھی موجود ہیں۔نیو کراچی کی رہائشی صبا اسلم نے اپنی والدہ اور والد کے نام سے انیسہ اسلم ویلفیئر نامی ایک تنظیم بنا رکھی تھی جو گذشتہ پانچ سالوں سے کام کر رہی ہے، وہ زیادہ تر چائلڈ لیبر اور بیوہ خواتین کے لیے کام کرتی تھیں اور میڈیکل کیمپ لگاتی تھیں پڑوسیوں کو کوئی بھی مسئلہ ہوتا تو وہ ان سے رابطہ کرتے تھے۔فیس بک پر ان کی کئی ویڈیوز ہیں جن میں وہ اپنے علاقے کی ڈرینیج کے مسائل کو اجاگر کر رہیں جبکہ ویب ٹی وی پر بھی وہ اس معاملے اور مشکلات کا ذکر کرتی نظر آتی ہیں۔ایس ایچ او سرسید احمد نواز بروہی کے مطابق ملزم کا گھر لڑکی کے گھر کے ساتھ تیسرے نمبر پر ہے گھر کے باہر کچرا پھینکنے پر اکثر ان کی تلخ کلامی ہوتی تھی چند روز قبل بھی ایسا واقعہ پیش آچکا ہے۔