کیا واقعی جاوید چوہدری کا بیٹا گرفتار ہوا ہے ؟

اسلام آباد (ویب ڈیسک) اسلام آباد کے ایف الیون تھری کالج میں مے نوشی کرکے کالج میں طلبہ اور اساتذہ کو خوفزدہ کرنے کا واقعہ سامنے آیا ہے، ملزمان کی گرفتاری کے بعد انہیں عدالت میں پیش کیا گیا۔مے نوشی کرکے ایف الیون تھری کالج میں داخل ہونے کا معاملہ ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن عدالت اسلام آباد میں زیر سماعت آیا،

جس پر عدالت نے ملزمان کو جوڈیشل ریمانڈ پر پرزنز میں بھیجنے کا حکم دے دیا۔ملزمان فائز جاوید، فیضان مرزا، حارث امتیاز اور فصل خان کو ڈیوٹی جج جوڈیشل مجسٹریٹ سلمان بدر کی عدالت میں پیش کیا گیا۔عدالت سے بخشی خانے لےجاتے وقت ویڈیو بنانے پر ملزمان اور اس کے ساتھیوں نے صحافیوں کے ساتھ ہاتھا پائی کی کوشش کی۔عدالت نے پولیس کی استدعا پر ملزمان کو 14 روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر دے دیا۔ملزمان کے خلاف اسکول کے پرنسپل نے گزشتہ روز تھانہ شالیمار میں مقدمہ درج کروایا تھا۔خبریں آرہی ہیں کہ ملزمان میں شامل فائز جاوید ، مشہور صحافی جاوید چوہدری کا بیٹا ہے ۔ تاہم اس کی ابھی تک تصدیق نہیں ہو سکی ہے ۔