کیس کا پانسہ پلٹ گیا

کراچی (ویب ڈیسک) بلوچستان کے ضلع تربت میں گزشتہ روز زندگی سے محروم ہونے والی خاتون صحافی اور انسانی حقوق کی سرگرم کارکن شاہینہ شاہین کے کیس میں مقدمہ ان کے شوہر کیخلاف درج کرلیا گیا ہے۔ پولیس نے مقدمہ درج ہونے کی تصدیق ہوئے بتایا کہ شاہینہ کے اہلخانہ کی شکایت پر

واقعہ کا مقدمہ پولیس تھانہ سٹی تربت میں ان کے شوہر نوابزادہ محراب گچکی کے خلاف درج کیا گیا ہے، شاہینہ کے ماموں امجد رحیم کے مطابق شاہینہ کو زندگی سے محروم کرنے کے بعد ملزم نے واقعے کو اور رنگ دینے کی بھی کوشش کی تھی ۔کہ شاہینہ نے خود موت کو سینے سے لگایا ہے ۔ ان کے بقول، ʼʼشاہینہ کی جان لینے کے بعد ملزم نے اپنی ساس سے فون پر یہ دعویٰ کیا تھا کہ ان کی بیٹی نے خود کو موت کو سینے سے لگا لیا ہے۔ شاہینہ، بلوچی رسالہ دجگہار کی ایڈیٹراورکوئٹہ میں سرکاری ٹیلی وژن پر بلوچی زبان کے ایک پروگرام کی میزبانی بھی کرتی تھی۔ شاہینہ شاہین نے پانچ ماہ قبل کراچی کی مقامی عدالت میں پسند کی شادی کی تھی۔ شاہینہ کے ماموں امجد رحیم کے بقول شاہینہ کے ساتھ ہونے والے واقعہ کی اطلاع انہیں گھر میں دوپہر پونے ایک بجے کے قریب موصول ہوئی۔ غیر ملکی خبررساں ادارے سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ میں گھر پر موجود تھا جب ایک جاننے والے نے موبائل پر اطلاع دی کہ میری بھانجی شاہینہ کے ساتھ یہ واقعہ ہوا ہے ۔ میں مقامی ٹیچنگ اسپتال پہنچا تو شاہینہ تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ چکی تھی۔

Sharing is caring!

Comments are closed.