گلگت بلتستان کو الگ صوبہ بنانے کے پیچھے چین کی سپورٹ ہونے کا انکشاف ۔۔۔۔ حیران کن

اسلام آباد(ویب ڈیسک)وزیر اطلاعات ونشریات گلگت بلتستان فتح اللہ خان نے کہا ہے کہ سی پیک میں گلگت بلتستان کیلئے ایک بھی پراجیکٹ نہیں رکھا گیا،تحریک انصاف کی حکومت سی پیک میں گلگت بلتستان کیلئے باقاعدہ اپنا حصہ رکھے گی، گلگت بلتستان کو صوبے بنانے کے لیے چین کی سپورٹ حاصل ہے،

بھارت کاگلگت بلتستان کے حوالے سے ہمیشہ غلط پراپیگنڈا رہا ہے، گلگت بلتستان کشمیرکا حصہ نہیں بلکہ تنازعہ کشمیر کا حصہ ہے، 2021 میں گلگت بلتستان عبوری آئینی صوبہ بنے گا،اس سلسلے میں تمام اسٹیک ہولڈرزایک پیج پہ ہیں،قومی اسمبلی اور سینٹ میں دو تہایی اکثریت کے ساتھ قرارداد منظور کی جائے گی۔اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے فتح اللہ خان نے کہا کہ گلگت بلتستان اسمبلی کے اگلے اجلاس میں عبوری آئینی صوبے کی قرار داد منظور کی جائے گی،ریاست عبوری آئینی صوبے کا فیصلہ کر چکی ہے،،ڈھائی سال سے تحریک انصاف کی وفاقی حکومت گلگت بلتستان کیلئے فنڈز فراہم کرہی ہے،سکردو اور گلگت میں میڈیکل کالجز بنائے جائیں گے،دیامر بھاشا ڈیم منصوبے میں روزگار کا سب سے پہلے حقدار دیامر کے باشندے ہیں۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *