یہ دوا کورونا کے علاج کے لیے بہترین اور موثر ہے ۔۔۔برطانوی سائنسدانوں کا بڑا اعلان

کراچی (ویب ڈیسک) برطانیہ کے سائنسدانوں نے ڈیکسامیتھاسون کو کورونا وائرس کے مریضوں کی جان بچانے والی مؤثر دوا قرار دے دیا۔ برطانوی ماہرین کے مطابق یہ دوا وائرس سے شدید بیمار مریضوں کو بچاسکتی ہے۔برطانیہ نے ڈیکسامیتھاسون کی برآمد پر پابندی بھی عائد کردی ہے۔ پاکستان میں درجنوں کمپنیاں اسے بنا رہی ہیں۔

برطانیہ کے وزیرِ صحت میٹ ہینکاک نے ان نتائج کے بارے میں ٹوئٹ میں بتایا کہ دنیا کی یہ پہلی مثال سائنس کی طاقت کا مظاہرہ ہے، میں بےحد خوش ہوں کہ ہم کو وڈ 19 کے علاج کی پہلا کامیاب ٹرائل کا اعلان کر سکتے ہیں۔برطانیہ کی آکسفورڈ یونیورسٹی کی جانب سے کیے جانے والے ایک طبی ٹرائل میں کو وڈ 19 کے مرض میں مبتلا 2100 مریضوں کو جب یہ دوا دی گئی تو معلوم ہوا کہ اس کی وجہ سے وینٹی لیٹر استعمال کرنے والے مریضوں میں موت کی شرح 30 فیصد کم ہو گئی، جب کہ وہ مریض جنہیں صرف آکسیجن دی جا رہی تھی، ان میں موت کی شرح 20 فیصد تک گر گئی۔ تاہم کورونا کے ایسے مریض جنہیں سانس کی تکلیف نہیں ہے، ان میں اس دوا کا کوئی خاص فائدہ نہیں پایا گیا۔ یہ دوا ان مریضوں کی مدد گار ثابت نہیں ہوئی جو زیادہ بیمار نہیں تھے۔اس تحقیق کے بانی بیٹر ہوربی کا کہنا ہے، یہ واضح ہو گیا کہ وہ مریض جنھیں آکسیجن کی ضرورت ہوتی ہے ان میں زندہ بچ جانے کی شرح کافی زیادہ ہے۔ لہٰذاڈیکسامیتھاسون کو علاج کا حصہ بنانا چاہیے۔ یہ مہنگی دوا نہیں ہے اور اسے دنیا بھر میں زندگیاں بچانے کے لیے فوری طور پر اس کا استعمال شروع کر دیا جانا چاہیے۔اس دوا کو جوڑوں کے درد، الرجی اور دمہ کے لیے ایک عرصے سے استعمال کیا جا رہا ہے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.