۔۔۔۔۔۔پاکستان اور پاکستانیوں کا اب

کراچی(ویب ڈیسک)معروف تجزیہ کار،سنیئر صحافی اور حکومت کی حمایت میں زمین آسمان ایک کر دینے والے اینکر پرسن کامران خان بھی حکومتی پالیسیوں کے خلاف پھٹ پڑے ،وزیراعظم عمران خان کو سوا تین سالہ کارکردگی کا “آئینہ “دکھاتے ہوئے ٹی 20 کرکٹ کی ایسی مثال دے دی کہ حکومت مخالف جماعتوں کے لئے

یقین کرنا مشکل ہو جائے گا ۔تفصیلات کے مطابق مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ پر اپنے ویڈیو پیغام میں کامران خان کا کہنا تھا کہ عمران خان صاحب میری کوشش رہی عوام کی امیدیں قائم رہیں ، تبدیلی کے وعدے پورے کرنے میں آپکی حوصلہ افزائی کرتا رہوں لیکن اب میں تھک رہا ہوں،آپ سے جڑی امیدیں مدھم پڑ گئیں ہیں ،اقتدار کے 60 میں سے 40 ماہ یعنی دو تہائی مدت گزر گئی،آپ کے خوشامدیوں میں سے کسی نہیں بتایا تو میں بتا دیتا ہوں کہ آپ کی حکومت خطرناک بھنور میں پھنس چکی ہے،خطرہ ہےکہ کنارہ لگنے سے پہلے کشتی ڈوب جائے گی،آپ کپتان ہیں،اسے ڈوبنے سے بچائیں،کمر توڑ مہنگائی کی چکی میں پسنے والے عوام تبدیلی کا انتظار کر رہے ہیں،چالیس ماہ گذر گئے، بہتری کیا آتی،ہر گزرتاہفتہ بگاڑ میں اضافہ کررہا ہے۔کامران خان کا کہنا تھا کہ خان صاحب آپ نے جذباتیت دکھائی ،گزشتہ ماہ آئی ایس آئی چیف کی تعیناتی کا معاملہ پاکستان کی جگ ہنسائی اور ہم سب کو ڈپریشن میں مبتلا کر گیا ،شکر ہے کہ نا قابل تلافی نقصان نہیں ہوا ،آرمی لیڈر شپ پہلے کی طرح آپ کی پشت پر کھڑی ہےمگر عام پاکستانی پریشان ہے،آپ کی حکومت کے چوتھے سال میں اس کا بجلی ، پٹرول اور اشیائے خوردونوش کا بل دگنا ہو چکا ہے،آپ ذمہ دار یا وزیر نجکاری میاں محمد سومرو ،چار سال پاکستان میں نجکاری نام کو نہیں ہوئی ،یہی وجہ ہے کہ قومی کارپوریشن،قومی خزانے کا جس مقدار میں خون چوس رہی تھی آج بھی اتنا ہی چوس رہی ہے،

افسوس قومی ائیر لائن(پی آئی اے ) کا تقریبا ٹھپ ہے،اَن گنت ریلوے حادثات نے نا اہلی اور سانحات کی نئی تاریخ رقم کی ،شوگر منافع خور گروہوں کے خلاف آپ نے ریاستی ادارے جتا دیئےمگر قیمت 125 روپے سے تجاوز کر گئی ۔انہوں نے کہا کہ احتسابی عمل کا یہ عالم کہ نیب بدعنوانی کیسز کے کسی ایک بڑے ملزم کو سزا نہیں ہوئی بلکہ ایڑی چوٹی کا زور لگانے کے باوجود لندن عدالت نے شہباز شریف کو منی لانڈرنگ الزامات سے بری کردیا،الیکشن 2018ء میں کراچی نے آپ کو اتنے ووٹ دیئے لیکن آپ نےپھر پلٹ کر نہ دیکھا ،40 ماہ قبل کراچی کے لئے نواز شریف کا گرین لائن منصوبہ آپ کو نصف تکمیل شدہ ملا مگر آج تک آپ اسے بھی نہ چلا سکے،پنجاب میں چھ ، چھ آئی جیز اور چیف سیکرٹریز بدل دیئے، آپ کی پوری ٹیم بد دل ہو گئی لیکن عثمان بزدار سے آپ کا اعتماد ٹس سے مس نہیں ہوا ۔سنیئر صحافی کا کہنا تھا کہ عمران خان صاحب آپ کے پاس صرف 20 ماہ ہیں ،سمجھیں ٹی 20 میچ ہے ،آخری 10 اورز میں آپ نے 200 رنز کرنے ہیں ،ٹیم عمران خان کیا یہ معجزہ دکھا سکتی ہے تو کیا بات ہے؟ورنہ بھاری دل سے خدا حافظ ،اللہ ہم سب کا حامی و ناصر ہو ۔

Comments are closed.