10 ہزار میگا واٹ بجلی اچانک کہاں چلی گئی ؟

لاہور (ویب ڈیسک ) بجلی کے ترسیلی نظام میں فریکوئنسی کے اچانک صفر ہونے سے ملک بھر میں رات گئے ہونے والے بجلی کے بڑے بریک ڈاؤن کے بعد بتدریج بجلی کی بحالی کا کام جاری ہے تاہم کئی علاقوں کے بجلی سے محروم رہنے کی اطلاعات ہیں ،بجلی بریک ڈاؤن کا اصل فالٹ تلاش نہیں کیا جاسکا

غفلت برتنے پر گڈو تھرمل پاور اسٹیشن کا ماتحت عملہ معطل کر دیا گیا۔ وزیر بجلی عمر ایوب اور وزیر اطلاعات شبلی فراز نے واضح کیا ہے کہ بریک ڈائون گدو میں خرابی سے ہواسسٹم سے 10ہزار میگاواٹ بجلی غائب ہوئی،تحقیقات کے بعد ہی حقائق سامنے آئیں گے، بجلی بریک ڈاؤن کی تحقیقات کیلئے اعلیٰ سطح کمیٹی قائم کردی گئی ہے۔ادھر بجلی بریک ڈاؤن پر حکومت اور اپوزیشن نے ایک دوسرے پر الزامات لگانا شروع کردیئے ۔ وفاقی وزرأ نے کہا کہ ماضی میں بجلی کاترسیلی نظام نہیں بنایا گیا، اب اس پر توجہ دی جا رہی ہے ۔ پاکستان مسلم لیگ (ن) کی ترجمان مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ اڑھائی سال سے نالائق ، نااہل اورمسلط چور ٹولے کی وجہ سےہر شعبہ کا بریک ڈاون جاری ہے، ملک گیر بجلی بریک ڈاون کا ابھی تک آپکو معلوم نہیں ہوسکا لیکن پتہ چل گیا کہ نوازشریف اسکا ذمہ دار ہے؟ کوئی شرم، کوئی حیا آپ کو تو آتی ہی نہیں ۔ انہوں نے کہا کہ گرمیوں میں نواز شریف کی بنائی ہوئی پچیس ہزار میگا واٹ تک بجلی کی ترسیل ہو رہی تھی لیکن آج نواز شریف کی غلطی کے وجہ سے نظام خراب ہو گیا،سردیوں میں نصف کھپت ہونے کے باوجود بجلی کی ترسیل نواز شریف کی غلطی کی وجہ سے نہیں ہو رہی؟ جبکہ سکھر سے بیورورپورٹ کے مطابق غفلت برتنے پر گڈو تھرمل پاور اسٹیشن کے 7 افسران کو معطل کر دیا گیا، گڈو تھرمل پاور ہاوس ذرائع کے مطابق گڈو تھرمل پاور اسٹیشن کے چیف ایگزیکٹیو حماد عامر ہاشمی نے 600میگاواٹ پاور پلانٹ کے اے آر ای سمیت 7 افسران و ملازمین کو معطل کردیا ہے، معطل کئے جانے والے افسران اور ملازمین میں ایڈیشنل پلانٹ منیجر سہیل احمد، جونیئر انجینئر دیدار چنا، فورمین علی حسن، آپریٹر ایاز ڈھر، سعید احمد، سراج میمن اور الیاس احمد شامل ہیں۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *