2018 میں اسی پرگروام میں عمران خان کےساتھ کیا ہوا تھا ؟

لاہور (ویب ڈیسک)نامور صحافی وجاہت علی خان اپنے ایک کالم میں لکھتے ہیں ۔۔۔۔۔۔۔۔ گزرے ہفتہ لندن میں ’’بی بی سی‘‘ کو دیا گیا سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار کا انٹرویو پاکستانی حکومت کے مشیروں اور وزراء سمیت میڈیا پر خوب زیر بحث رہا ہے۔ یہ انٹرویو برطانیہ کے ممتاز صحافی اور ’’بی بی سی‘‘ کے پروگرام

’’ہارڈ ٹاک‘‘ کے میزبان اسٹیفن جان سکر نے کیا ۔و۔ 2005ء میں ’’ہارڈ ٹاک‘‘ کے میزبان ٹم سبیٹن کی جگہ ہارڈ ٹاک کی میزبانی کر رہے ہیں ۔ ابھی 2015ء میں اسی شو میں وزیراعظم عمران خان کا انٹرویو بھی اسٹیفن سکر نے کیا تھا اور ایک دفعہ 2018ء میں زینب بداوی نےبھی ’’ہارڈ ٹاک‘‘میں عمران خان کا انٹرویو کیا، حکومتی وزیر و مشیر ٹیلی ویژن چینلز پر چھائے، وہ پریس کانفرنسز کرتے اور اسحاق ڈار کی ایک ’’چوک‘‘ پر شادیانے بجاتے نظر آئے۔  چند ہی روز پہلے اسی ’’ہارڈ ٹاک‘‘ میں عمران خان بھی مہمان تھے اور میزبان کے تابڑ توڑ سوالات کے سامنے بے بس نظر آئے تھے اور اپنے ’’بیانیے‘‘ کا دفاع کرنے میں بری طرح ناکام رہے تھے۔اسحاق ڈار کے مذکورہ انٹرویو کو ڈسکس کرتے

Sharing is caring!

Comments are closed.